ہائیڈروجن بم تجربہ کے بعد شمالی کوریا سے ریڈیو ایکٹیو گیس پھیلنا شروع،تیسری جنگ عظیم کا خطرہ اور بڑھا

سیول :جنوبی کوریا نے آج کہا کہ شمالی کوریا کی جانب سے کئے گئے ہائیڈروجن بم تجربہ کے بعد ریڈiو ایکٹیو شینان133کے ٹکڑے پائے جانے کی تصدیق ہوئی ہے جس سے تیسری جنگ عظیم کا خطرہ اور بھی بڑھ گیا۔ تاہم جنوبی کوریا نے یہ بھی کہا ہے کہ فی الحال یہ قطعیت سے نہیں کہا جا سکتا کہ شمالی کوریا نے ہائیڈروجن بم کا ہی تجربہ کیا تھا۔
نیوکلیئر سیفٹی اینڈسیکورٹی کمیشن نے بتایا کہ ملک کے شمال مشرقی حصے میں زمین پر لگے جینان ڈیڈیکٹرنے 9 مواقع پر ‘جینان -133’ آئی سوٹوپ کے ا جزاء کا پتہ لگایا ہے جبکہ ایسے ہی ایک ایکٹیو ڈیوائس کو چارمرتبہ آئی سوٹوپ کے جز کا پتہ چلا ہے۔ تاہم کمیشن نے کہا کہ اس گیس کے اخراج نے ماحول کو کسی طرح کا نقصان نہیں پہنچایا ہے۔
کمیشن کے ایگزیکٹو کمشنر چوئی جونگ بئی نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ جینان کےجز کی مقدار سے یہ پتہ لگانا مشکل ہے کہ ایٹمی تجربہ کتنا طاقتور تھا لیکن یہ طے ہے کہ یہ گیس شمالی کوریا میں خارج ہوئی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن اس بات کی تصدیق نہیں کر سکتا کہ شمالی کوریا نے کس قسم کا ایٹمی تجربہ کیاہے

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ww3 fears mount after radioactive gas spotted coming from north korea in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
Tags: ,

Leave a Reply