اذان کے لیے لاؤڈ اسپیکر کے استعمال کے خلاف شکایت کرنے پرانڈونیشیا میں چینی خاتون کو 18 ماہ قید کی سزا

جکارتہ: انڈونیشیا کی ایک عدالت نے مسجد کے خلاف شکایت کرنے پر خاتون کو توہینِ مذہب کے جرم میں 18 ماہ قید کی سزا سنائی ہے۔ خبررساں ایجنسی اے پی کے مطابق گزشتہ روز چینی خاتون مائیلیانا اس وقت شدت سے رو پڑیں جب جج واہیو پراستیو وبوو نے انہیں 8 ماہ قید کی سزا سنائی، انہیں عدالت سے ہتھکڑیاں پہنا کر لے جایا گیا تھا۔

پراسیکیوٹرز کا کہنا تھا کہ 44 سالہ خاتون نےانڈونیشیا میں مذہب اسلام کی توہین کی۔جولائی 2016 میں مائیلیانا نے مسجد سے اذان کے لیے لاو¿ڈ اسپیکر کے استعمال کے خلاف شکایت کی تھی جس کے ردعمل میں سماٹرا کے علاقے تجانگ بلائی میں کم ازکم 14 بدھ مت مندروں کو آگ لگادی گئی تھی اور توڑ پھوڑ بھی ہوئی تھی۔خاتون کی وکیل رانتو سبارانی کا کہنا ہے کہ وہ سزا سے متعلق اپیل دائر کریں گی جبکہ اسلامک کمیونٹی فورم کے ایک گروہ کا کہنا ہے کہ مائیلیانا کو بہت کم سزا سنائی گئی ہے۔

واضح رہے کہ انڈونیشیا میں توہین مذہب کی سزا زیادہ سے زیادہ 2 سال ہے۔انڈونیشیا کا آئین مذہبی اور آزادی اظہار رائے کی ضمانت دیتا ہے لیکن حالیہ چند سالوں میں توہین مذہب کے ایسے کئی مقدمات درج ہوئے ہیں جن میں اکثر کو سزاو¿ں کا سامنا کرنا پڑا ہے۔گزشتہ سال جکارتا کے چینی نڑاد عیسائی گورنر کو سیاسی حریفوں کی جانب سے احتجاج کرنے پر توہین مذہب کے جرم میں 2 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔پروسیکیوٹر کی جانب سے توہین مذہب کی سزا کو کم قرار دیے جانے کے باجود ججوں نے سزا سنادی تھی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Woman jailed in indonesia for complaining that call to prayer is too loud in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply