ہند سے بامعنی مذاکرات کے لیے پاکستان کو پہلے دہشت گردی کا بنیادی ڈھانچہ تباہ کرنا چاہئے: حسین حقانی

واشنگٹن: ہندوستان کے اس موقف کی کہ ”مذاکرات اور دہشت گردی“ ساتھ ساتھ نہیں چل سکتے، تائید کرتے ہوئے پاکستان کے ایک سابق سفارت کار نے کہا ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان کوئی بھی اعلیٰ سطحی مذاکرات اس وقت تک کامیاب نہیں ہو سکتے جب تک کہ پاکستان اپنی سرزمین پر اور اپنے مقبوضہ علاقوں میں دہشت گردی کے بنیادی ڈھانچہ کو فنا کرنا یقینی نہیں بنا دیتا ۔

سابق پاکستانی سفیر متعین امریکہ حسین حقانی نے یہاں میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہندستان کے ساتھ مذاکرات کے لیے پاکستان کی حالیہ کوششوں کو اس پر پڑنے والے اقتصادی و بین الاقوامی دباؤ کے تناظر میں دیکھی جانی چاہئے۔

حقانی نے ان خیالات کا اظہار کرغزستان کے شہر بشکیک میں13-14جون کو ہونے والے شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) اجلاس سے عین قبل کیا ہے۔

ہندوستان اور پاکستان دونوں ہی اس کے رکن ہیں اور دونوں ہی ملکوں کے وزراءاعظم نریندر مودی اور عمران خان اس اجلاس میں شرکت کر رہے ہیں۔لیکن اجلاس کے دوران فرصت کے لمحات میں بھی ان دونوں رہنماؤں کے مابین کوئی سرکاری ملاقات بات طے نہیں ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: We must act against terror for fruitful talks with india ex pak diplomat in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.