امریکہ میں مسلم دوشیزہ نسلی تشدد میں نہیں روڈ ریج میں ہلاک ہوئی ہے:پولس

ورجینیا:پولس کے مطابق امریکہ کے ورجینیا میں اتوار کی صبح ایک مسجد کے قریب جس مسلم نوجوان کی موت ہوئی تھی وہ روڑ ریج کا نتیجہ تھی اور اس میں نسلی تشدد کا کوئی معاملہ نہیں بنتا ہے ۔ اس لڑکی پر اتوار کی صبح واشنگٹن سے 50 کلومیٹر دور ورجینیا کے علاقہ اسٹرلنگ میں واقع فنس بری مسجد کے قریب اس وقت یہ حملہ ہوا تھا جب یہ تراویح کی نماز اور شب قدر میں عبادت کر کے سحری کے بعدفجر کی نماز پڑھ کرگھر واپس جارہی تھی۔تاہم پولیس نے ابھی تک اس کی موت کی کوئی واضح وجہ نہیں بتائی ہے لیکن یہ ضرور کہا کہ اس معاملے میں ایک نوجوان ڈارول مارٹنیج ٹورس (22) کو گرفتار کیا گیا ہے اور اس کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کیا گیا ہے۔
پولیس ذرائع نے بتایا کہ حادثہ روڈ ریج کا نتیجہ ظاہر ہوتا ہے اور اب تک کی تحقیقات سے پتہ چلتا ہے کہ اس میں نسلی تشدد کا کوئی بھی پہلو ابھر کر سامنے نہیں آیا ہے۔ پولیس افسران نے اس لڑکی کا نام نہیں بتایا ہے لیکن یہ اتنا ضروربتایا ہے کہ وہ ورجینیا کی رہنے والی تھی۔ اس دوران اخبار واشنگٹن پوسٹ نے اس نوجوان کا نام نابرہ حسنین بتایا ہے اور وہ اس وقت مسلمانوں جیسے کپڑوں میں ملبوس تھی جس سے یہ شبہ کیا جا رہا ہے کہ شاید اسی وجہ سے اسے نشانہ بنایا گیا ہوگا۔ پولیس نے اس حادثے کے دو گھنٹے بعد ہی مارٹنیج کو مشکوک حالت میں گھومتے ہوئے گرفتار کر لیا ہے۔ عدالت نے مارٹنیج کو ضمانت ملنے تک جیل میں رکھنے کا حکم دیا ہے۔ اسے کل ایک سرکاری وکیل بھی مہیا کیا گیا تھا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Virginia muslim teenagers death being investigated as road rage police say in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply