شام میں شہریوں کو اتحادی افواج کے حملوں سے محفوظ رکھنے کے مناسب اقدامات نہیں کئے گئے : ایمنسٹی

لندن:انسانی حقوق پر مرکوز غیر سرکاری تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کہا ہے کہ شام میں دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) کے خلاف امریکہ کی قیادت والی اتحادی فوج نے انسانی نقصان سے بچنے کے لئے مناسب احتیاطی قدم نہیں اٹھائے اور شہریوں پر اپنی مہم کے اثر کا کم اندازہ کیا ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل کے بیروت کے علاقائی دفتر میں تحقیقی امور کے ڈپٹی ڈائریکٹر لن مالوف نے کل ایک بیان میں کہاکہ یہ مناسب وقت ہے کہ امریکی حکومت یہ واضح کرے کہ شام میں اتحادی افواج کے حملوں میں کتنے لوگ مارے گئے ہیں۔
ہمیں خدشہ ہے کہ امریکہ کی قیادت والی اتحادی افواج شام میں اپنی مہم میں انسانی نقصان کا کم اندازہ لگا رہی ہے۔ برطانیہ نشیں تنظیم کا کہنا ہے کہ ستمبر 2014 سے جاری اتحادی افواج کے 11 حملوں میں 300 شہری مارے گئے۔ مسٹر مالوف نے کہا، ”موجود ثبوتوں کے تجزیہ سے پتہ چلتا ہے کہ اتحادی فوجیں کم از کم انسانی نقصان کے لئے مناسب احتیاطی قدم اٹھانے میں ناکام رہی ہیں“۔
امریکہ کے محکمہ دفاع پینٹاگون کا کہنا ہے کہ اس نے اس بات کا بہت خیال رکھا ہے کہ شہریوں کو کم سے کم نقصان پہنچے۔ جولائی میں پینٹاگون نے بتایا تھا کہ گذشتہ سال 28 جولائی سے اس سال 29 اپریل کے درمیان عراق اور شام میں دہشت گرد ٹھکانوں پر فضائی حملوں میں 14 شہریوں کی موت ہوئی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Usa must come clean about civilian deaths caused by coalition air strikes in syria in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply