امریکہ مودی کی آمدکا شدت سے منتظر اور دورے کی کامیابی کا متمنی

واشنگٹن:یوں تو نریندر مودی وزیر اعظم بننے کے بعد دو سال کے اندر تین بار امریکہ کا دورہ کر چکے ہیں لیکن اس بار کے دورے کو امریکہ کچھ زیادہ ہی اہمیت دے رہا ہے۔
اس کی وجہ شاید یہ ہے کہ مسٹر مودی کا یہ دورہ رخصت پذیر صدر براک اوبامہ کے دور میں آخری دورہ امریکہ ہوگا۔ اس دورے کے حوالے سے امریکہ نے کہا ہے کہ وہ ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی کی آمد کا منتظر ہے اور اس کی خواہش ہے کہ آئندہ ہفتہ ہونے والا مودی کا دورہ امریکہ ہر لحاظ سے کامیاب دورہ ثابت ہو۔
وزارت خارجہ کے ترجمان جان کربی نے کہا کہ جب بھی امریکہ نے ہندوستانی حکام سے بات کی خواہ وہ معمول کی ملاقات ہو، دو طرفہ ملاقاتیں رہی ہوں تو تبادلہ خیال محض دو طرفہ امورو مفادات تک ہی محدود نہیں رہے بلکہ تمام علاقائی و بین الاقوامی معاملات زیر غور رہے۔
واضح رہے کہ مسٹر مودی 4جون سے پانچ ملکی دورے پر روانہ ہو رہے ہیں۔ وہ اپنے دورے کا آغاز افغانستان سے کریں گے اور قطر، سوئزر لینڈ ہوتے ہوئے امریکہ پہنچیں گے جہاں 7جون کو وہ امریکی کانگریس کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے اور 8جون کو میکسیکو ہوتے ہوئے وطن واپس آجائیں گے۔
مودی ہندوستان کے پانچویں وزیر اعظم ہیں جو امریکی کانگریس میں تقریر کریں گے۔ اس سے قبل 1985میں راجیو گاندھی کانگریس سے خطاب کرنے والے پہلے ہندوستانی وزیر اعظم تھے ۔ان کے بعد 1994میں پی وی نرسمہا راو¿ نے،2000میں اٹل بہاری باجپئی نے اور 2005میں مودی کے پیش رو کانگریس رہنما ڈاکٹر منموہن سنگھ نے امیریکی کانگریس کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا تھا۔
1984کے بعد سے مکمل میعاد کا وزیر اعظم کانگریس کے دونوں ایوانوں ایوان نمائندگان اور سینیٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتا رہا ہے۔

Title: us wants pm modis visit to be successful | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply