ایغور مسلمانوں پر مظالم : امریکہ نے چینی عہدیداروں پر ویزا بندشیں لاگو کر دیں

واشنگٹن : امریکہ نے چین پر تجارتی پابندیاں عائد کرنے کے ایک روز بعد کہا کہ اب وہ چینی عہدیداروں پر اس وقت تک ویزا بندشیں جاری رکھے گا جب تک کہ وہ مغربی خطہ شنجیانگ میں ایغور اور دیگر مسلمانوں پر مظالم بند نہیں کر دیتا۔

ڈونالڈ ٹرمپ ایڈمنسٹریشن کے اس اقدام کو شنجیانگ میں تاریخی بحران دور کرنے کی مساعی میں کسی غیر ملکی طاقت کا نہایت سخت اقدام سے تعبیر کیا جارہا ہے۔

جو ایسے حالات میں کیا گیا ہے جب امریکہ اور چین کے درمیان مختلف معاملات میںزبردست کشیدگی چل رہی ہے۔

وزیر خارجہ مائیک پوم پیو نے ٹوئیٹ کے توسط سے کہا کہ ”چین نے 10لاکھ سے زائد مسلمانوں پر ظلم و ستم کے پہاڑ توڑ رکھے ہیں انہیں قید کر رکھا ہے اور شنجیانگ سے اسلام اور اسلامی ثقافت کو ملیا مٹ کرنے کی ایک منظم مہم چلا رکھی ہے“۔

انہوں نے مزید کہا کہ “چین کو اپنی سفاکانہ حراست و مظالم ختم کرنے چاہئیں، من مانی طور پر حراست میں لیے گئے تمام مسلمانوں کو رہا کرنا چاہئے اور بیرون ملک چینی مسلمانوں پر جبرو استبداد ختم کرنا چاہئے“۔

اسی کے ساتھ پوم پیو نے ایک بیان بھی جاری کیا کہ امریکی حکومت شین جیانگ میں رہائش پذیر ایغور ، خزاخستانیوں یا دیگر مسلم گروپوں کے لوگوں کو قید میں ڈالنے یا ان پر مظالم ڈھانے میں ملوث حکومتی و حکمراں کمیونسٹ پارٹی عہدیداروں کو ویزا پابندی عائد کر دے گی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Us restricts visas to china officials over uighur repression in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.