امریکہ نے شام کے طیفور ہوائی اڈے پر میزائل حملوں کی تردید کی

بیروت: امریکہ نے کہا ہے کہ شام کے دارالحکومت دمشق کے قریب واقع طیفور ہوائی اڈے پر ہونے والے میزائل حملوں میں اس کا کوئی ہاتھ نہیں ہے۔جبکہ دوسری جانب شام کا خیال ہے کہ یہ امریکی جارحیت ہے۔یہ میزائل حملہ دمشق کے مشرقی مضافات میں شامی اپوزیشن کا بچا کھچا آخری ٹھکانہ پر مشتبہ زہریلی گیس حملہ کے ایک روز بعد ہوا ہے۔
اس حملہ میں کم از کم40افراد ہلاک ہو ئے تھے، جن میں کئی خاندان اپنے گھروں اور پناہ گاہوں میں مردہ پائے گئے تھے۔اگرچہ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے اس کیمیائی حملہ کے بعد عہد کیا تھا کہ اس کا شام کو سنگین خمیازہ بھگتنا ہو گا ۔لیکن اس دھمکی کے بعد ہونے والے میزائل حملوں کے حوالے سے پنٹاگون نے ترجمان کرسٹوفر شیرووڈ نے ایک بیان میں کہا کہ فی الحال محکمہ دفاع شام میں فضائی حملے نہیں کر رہا۔
واضح ہو کہ گذشتہ سال شمالی شام کے شہر خان شیخون میں ایک کیمیائی حملہ کے بعد جس میں درجنوں افراد کی موت ہو گئی تھی،امریکہ نے شام میں فضائیہ کے ایک اڈےکو نشانہ بنا کر درجنوں ٹام ہاک میزائل حملے کیے تھے۔

Title: us denies it launched missile strike on syrian airbase | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply