روسی سفیر کے قتل کے پس پشت فتح اللہ گلین کا ذہن کارفرما: ترکی

انقرہ:ترکی نے امریکہ سے کہا کہ روسی سفیر آندرے کارلوف کے قتل کے پیچھے مسلم مذہبی رہنما فتح اللہ گلین کا ہاتھ تھا۔ وزارت خارجہ کے ذرائع نے آج بتایا کہ ترکی کے وزیر خارجہ مولود جاوش اگلو نے امریکہ کے وزیر خارجہ جان کیری سے منگل کو فون پر یہ بات کہی۔
انہوں نے مسٹر کیری سے کہا کہ صرف ترکی ہی نہیں بلکہ روس کا بھی یہی خیال ہے کہ اس کے سفیر کے قتل کے پس پشت فتح اللہ گلین کادماغ کار فرما تھا۔ مسلم مذہبی رہنما فتح اللہ گلین امریکہ کے پیسووینیا میں جلاوطنی کی زندگی بسر کر رہے ہیں۔ ترکی نے اس سے پہلے جولائی میں اپنے یہاں ہوئی بغاوت کی ناکام کوشش میں فتح اللہ گلین کا ہاتھ بتایا تھا۔ تاہم گلین ان الزامات سے انکار کرتا رہا ہے۔
واضح رہے کہ ترکی میں روسی سفیر آندرے کارلوف کو پیر کے روز اس وقت گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا جب وہ ایک پروگرام میں تقریرکر رہے تھے۔ روسی سفیر پر حملہ کرنے والا پولیس اہلکار تھا اور وہ حملے کے دن سے ہی رخصت علالت پر تھا اور اس نے میڈیکل سرٹیفکیٹ لانے کا وعدہ کیا تھا۔ حملہ آور کی شناخت 22 سالہ میولٹ مرٹ الٹنٹاس کے طور پر ہوئی ہے جو حملے کے وقت ’حلب کو مت بھولو‘ اور ’اللہ اکبر‘ نعرے لگا رہا تھا۔
وہ انقرہ کے مضافات دیمیتولر میں ایک فلیٹ میں رہتا تھا۔حملے سے پہلے کی رات اس نے گیلری کے نزدیک ایک ہوٹل میں گزاری تھی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Us based gulen network behind killing of russian ambassador in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply