برطانیہ میں بالفور اعلامیے کی 100سالگرہ پر احتجاجی مظاہرہ

لندن: گذشتہ ہفتہ بالفور اعلانیہ کی 100ویں سالگرہ کے موقع پر وسطی لندن میں ہزاروں افراد کے مظاہرے میں فلسطین کے معروف سماجی کارکن اور سیاست داں مصطفےٰ برغوثی بھی شامل تھے۔لندن میں ہزاروں افراد نے امریکی سفارت خانے کے باہر بالفور اعلامیے کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے برطانیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس اعلامیہ کے اجرا پر فلسطینی عوام سے معافی مانگنے کے ساتھ ساتھ اسرائیلی جارحیت کے نتیجے میں پہنچنے والے نقصان کا تاوان بھی ادا کرے۔
احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے فلسطینی اتھارٹی کے نمائندے عمانوئیل حساسیان نے کہا ہے کہ اسرائیل ایک نسل پرست حکومت ہے جو جنوبی افریقہ کی نسل پرست حکومت سے زیادہ بد تر ہے۔ اس کے باوجودبرطانیہ کی جانب سے اسرائیل کو جمہوری حکومت قرار دینا انتہائی شرمناک ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ فلسطین کے عوام اپنے وطن کے چپے چپے کی آزادی تک صہیونی دشمن کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے اور یہ ان کا بنیادی اور فطری حق ہے۔
ان کا کہنا ہے کہ برطانیہ کو اعلان بالفور کے اجرا پر فلسطینی عوام سے نہ صرف معافی مانگنا چاہئے بلکہ اسرائیلی قبضے کے نتیجے میں فلسطینی عوام کو پہنچنے والے نقصانات کا تاوان بھی ادا کرنا چاہئے۔فلسطین کی نیشنل ایکشن پارٹی کے سربراہ مصطفی برغوثی نے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے اسرائیل کو تاریخ کی بدترین نسل پرست حکومت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل نے بالفور اعلامیہ کی بنیاد پر بدستور سرزمین فلسطین پر قبضہ کر رکھا ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ میرے نزدیک یہ زیادہ اہم ہے کہ میں اس موقع پر موجود تھا اور تمام فلسطینی برطانوی عوام کی ان سے اظہار یکجہتی کو محسوس کر رہے ہیں۔ یہ بات کافی اہمیت رکھتی ہے کہ برطانوی عوام اس معاملہ میں حکومت برطانیہ کے موقف کے خلاف ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: uk protesters mark 100 years since balfour declaration in Urdu | In Category: دنیا  ( world ) Urdu News

Leave a Reply