برقعہ پوش خواتین کو لیٹر باکس اور بینک لٹیروں سے تعبیر کرنے پر وزیر اعظم برطانیہ کی سابق وزیر خزانہ کو پھٹکار

لندن: برطانیہ کی وزیر اعظم تھریسا مئے نے اپنے سابق وزیر خارجہ بورس جانسن کے اس بیان پر انہیں زبردست ڈانٹ پھٹکار لگائی جس میںانہوں نے کہا تھا کہ برقعہ پوشمسلم خواتین لیٹر با کس یا بینک ڈاکوؤں کی طرح لگتی ہیں ۔

جانسن جنہوں نے بریکزٹ معاملہ سے نمٹنے کے مئے کے طریقہ کار سے غیر متفق ہونے کے باعث گذشتہ ماہ استعفیٰ دے دیا تھا اسی ہفتہ روزنامہ ٹیلی گراف میں لکھا تھا کہ ڈنمارک کا برقعہ پر، جو کہ سر تا پا جسم کو چھپالیتا ہے اور صرف آنکھیں نظر آتی ہیں، پابندی لگانا غلط تھا ۔

لیکن ساتھ ہی جانسن نے یہ بھی کہا کہ یہ لباس بڑا جابرانہ، مضحکہ خیز اور عورت کو لیٹر باکسوں اور بینک لٹیروں جیسا بنا دیتا ہے۔ان کے اس بیان پر دیگر سیاست دانوں اور برطانوی مسلم گروپوں نے شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ان کی لعن طعن کی تھی۔

مئے نے کہا کہ وہ سمجھتی ہیں کہ جانسن نے لوگوں کا حلیہ بیان کرتے ہوئے جو زبان استعمال کی ہے وہ ناشائستہ اور ناراضگی پیدا کرنے والی ہے۔انہوں نے واقعتاً غلط زلافاظ استعمال کیے ہیں ۔ انہیںایسے الفاظ نہیں استعمال کرنے چاہئیں تھے۔انہوںنے کہا کہ اگر خواتین برقعہ پسند کرتی ہیں تو انہیں پہننا چاہیے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: uk pm theresa may scolds boris johnson for burqa remark after outcry in Urdu | In Category: دنیا  ( world ) Urdu News

Leave a Reply