اردوغان کی مسلم رہنماؤں سے فرقہ بندی ختم کر نے کی اپیل

استنبول: ترک صدر رجب طیب اردوغان نے استنبول میں تنظیم اسلامی کانفرنس(او آئی سی) کے سربراہ اجلاس میں شرکت کے لیے آنے والے مسلم رہنماو¿ں سے پر زور اپیل کی کہ وہ عالم اسلام میں مسلکی تقسیم ختم کر کے دہشت گردی کے خلاف جنگ کرنے والی طاقتوں میں شامل ہو جائیں۔اردوغان نے اپنی افتتاحی تقریر میں کہا کہ وہ سمجھتے ہیںکہ اس وقت سب سے بڑا چیلنج فرقہ بندی کو دور کرنے کی ضرورت کا ہے۔
میرا مذہب سنی اور شیعہ نہیں ہے بلکہ میرا مذہب صرف اور صرف اسلام ہے ۔یہاں یہ بات قابل ذکرہے کہ اس کانفرنس میں سعودی حکمراں شاہ سلمان اور ایران کے صدر حسن روحانی بھی موجود تھے اور دونوں ہی یمن اور شام میں حریف گروپوں کی حمایت کرتے ہیں۔دونوں ہی ممالک ایک دوسرے پر دہشت گردی کے لیے مالی اعانت کرنے اور مشرق وسطیٰ میں کشیدگی پیدا کرنے کا الزام عائد کرتے رہتے ہیں۔ترک صدر اردوغان نے امید ظاہر کی کہ یہ سربراہ اجلاس ہم سب کو متحد کرے گا ۔ انہوںنے دہشت گردی کی سرکوبی کے یہ کہتے ہوئے ایک ادارہ قائم کرنے کی تجویز پیش کی کہ دہشت گردانہ حملوں کے خلاف اور مسلم ملکوں میں جاری بحران دور کرنے کے لیے دیگر طاقتوں کا انتظار کرنے کے بجائے ہمیں خود اسلامی اتحاد کے توسط سے اس کا حل نکالنا چاہئے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Turkey urges unity to fight terrorism as muslim leaders meet in istanbul in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply