داعش کے خلاف کردش فورسز میں شمولیت کے الزام پر ترکی عدالت نے سابق برطانوی فوجی کوساڑھے 7سال قید کی سزا سنا ئی

انقرہ : برطانوی سابق فوجی کو داعش کے خلاف برسرپیکار کردش فورسز میں شمولیت کے الزام پر ترکی کی عدالت نے 7 برس قید کی سزا سنا ئی ہے۔ برطانیہ کے سابق فوجی اہلکار پر الزام ہے کہ انہوں نے شام میں داعش کے خلاف جنگ میں شرکت کے لیے کردش فورسز میں شمولیت اختیار کی تھی۔

بی بی سی کے مطابق سابق فوجی اہلکار کی والدہ نے بتایا کہ 25 سالہ جوے روبنسن کو 2017 میں دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتار کیا گیا تھا۔ان پر کردش عسکری گروپ وائے پی جی کا رکن ہونے کا الزام ہے جس کو ترکی میں دہشت گرد تنظیم قرار دیا جا چکا ہے۔روبنسن کو ساڑھے 7 سال قید کی سزا سنائی گئی لیکن وہ ضمانت پر ہیں جبکہ انہوں نے سزا کے خلاف اپیل کا فیصلہ کرلیا ہے۔

روبنسن کی والدہ کا کہنا تھا کہ انہیں گزشتہ روز برطانیہ کے دفتر خارجہ سے ایک فون کال موصول ہوئی جس میں ان کے بیٹے کو ہونے والی سزا کی تصدیق کی گئی۔بیٹے کو سنائی جانے والی سزا پر روبنسن کی والدہ کا کہنا تھا کہ ‘یہ صورت حال افسوسناک اور شرمناک ہے، یہ میری سمجھ سے بالا تر ہے کہ ایسا کیسے ہوسکتا ہے’۔

برطانیہ کے سابق فوجی اہلکار روبنسن، جنہوں نے کچھ عرصہ افغانستان کی جنگ میں گزارا تھا، انہیں گزشتہ سال گرفتاری کے بعد 4 ماہ تک جیل میں رکھا گیا تھا۔انہیں گزشتہ سال نومبر میں ضمانت پر رہا کیا گیا تھاتاہم ان کے ترکی چھوڑنے پر پابندی تھی۔رپورٹ میں بتایا گیا کہ روبنسن نے 5 ماہ کردش فورسز کے ساتھ رضا کار کی حیثیت سے گزارے تھے جو داعش کے خلاف شام میں لڑائی کررہی ہیں۔ادھر برطانیہ کے دفتر خارجہ کے ترجمان کا کہنا تھا کہ ‘ہم برطانوی شہری کو ترکی میں قونصلر رسائی دینے کے لیے تیار ہیں’۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Turkey sentences british ex soldier to jail over links to kurdish ypg militia in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply