ترکی نے شام سے امریکی فوجی انخلا کو ٹرمپ کی خالصتاً بیان بازی قرار دیا

انقرہ: ترکی کے وزیر خارجہ مولود جاویش اوغلونے شام سے امریکی فوجی انخلا کے حوالے سے امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے بیانات کو ”خالصتاً بیان بازی“ قرارد یا اور کہا کہ ترکی کے سینیئر سفارت کاروں کے ایک وفد کے دورہ امریکہ کا واحد مقصد جنگ زدہ ملک میں امریکہ کے ”حقیقی ارادوں“ کو سمجھنا تھا۔
30مارچ کو یوکرین کے وزیر خارجہ کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کا ذکر کرتے ہوئے چاویش اوغلو نے کہا کہ ٹرمپ نے ترکی کے ساتھ اپنی سابقہ گفتگو میں شام سے امریکی فوجوں کی حتمی واپسی کی بات کہی تھی۔ لیکن29مارچ کا ان کا بیان ”انفرادی“ تبصرہ نظر آتا ہے۔انہوں نے اسی روز وزارت خارجہ کے متضاد بیان کو حوالہ دیا۔
واضح رہے کہ ٹرمپ نے29مارچ کو اعلان کیا تھا کہ امریکہ بہت جلدشام سے اپنی فوجیں واپس بلا لے گا۔ اب دوسرے لوگ اس کو سنبھالیں۔ لیکن اس کے تھوڑی ہی دیر بعد جب وزارت کاعرجہ کے ترجمان کی یومیہ بریفنگ میں اس ضمن میں سوال کای گیا تو انہوں نے اس سے اظہار لاعلمی کیا اور کہا کہ انہیں اس سلہ میں کچھ معلوم نہیں ہے۔
اس سے قبل برطرف وزیر کارجہ ریکس ٹیلرسن نے کہا تھا کہ امریکہ شام میں اپنی فوجی موجودگی برقرار رکھے گا تاکہ دولت اسلامیہ فی العراق و الشام دوبارہ سر نہ ابھار سکے۔

Title: trumps statement for withdrawal from syria rhetorical says turkish fm cavusoglu in Urdu | In Category: دنیا  ( world ) Urdu News

Leave a Reply