ٹرمپ ایڈمنسٹریشن حکومت مخالف مظاہرین سے نمٹنے کے لیے پولس کو فوجی اسلحہ سے لیس کرے گا

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ایڈمنسٹریشن نے ملک بھر میں حکومتی پالیسیوں کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین کو کچلنے کے لئے امریکی پولیس کو جنگی ہتھیاروں، فوجی لباس ،سنگینوں اور یہاں تککہ گرینیڈ لاننچرز سے لیس کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے تاکہ ٹرمپ کی نسل پرستانہ ہالیسیوں کے خلاف مظاہرہ کرنے والوں کو سختی سے ایسا کچلا جا سکے کہ وہ دوبارہ سر نہ اٹھا سکیں۔ امریکی قانون کے مطابق پولیس کو جنگی ہتھیاروں سے لیس کرنا ایک غیر قانونی کام ہے اور ٹرمپ اس قانون کو منسوخ کرنا چاہتے ہیں ۔ ایک امریکی اخبار کی رپورٹ کے مطابق ٹرمپ نے پولیس کو جو منصوبہ پیش کیا ہے اس میں عوامی مظاہروں کو کچلنے کے لئے ان جنگی ہتھیاروں کے استعمال کی اجازت دی جائے گی جن کے استعمال پر اب تک پابندی عائد تھی۔رپورٹ کے مطابق ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے پولیس کے لئے جنگی ہتھیار خریدنے کے لئے بجٹ بھی مختص کیا گیا ہے۔ امریکی پولیس مختلف بہانوں کے ذریعے گزشتہ طویل مدت سے ان ہتھیاروں کے حصول کے لئے کوشش کر رہی ہے اور امریکی حکومت پر مسلسل دباو ڈال رہی ہے کہ وہ پولیس کو محدود کرنے والے قانون کو ختم کرے۔واضح رہے کہ ٹرمپ نے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ امریکی پولیس کو حق ہے کہ وہ احتجاجی مظاہرین کو زد و کوب کرے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Trumps plan to give police easier access to military weapons in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply