ٹرمپ امریکی فوجیوں کے ساتھ ”یوم تشکر“ منانے اچانک افغانستان پہنچ گئے

کابل: امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ امریکہ کے قومی تہورا یوم تشکر کے موقع پرافغانستان میں تعینات امریکی فوج کو تہوار کی مبارکباد دینے اچانک ہی کابل پہنچ گئے۔

سلامتی کے نقطہ نظر سے ڈونالڈ ٹرمپ کے اس دورے کو خفیہ رکھا گیا تھا۔ اور ان کی آمد کے پروگرام سے واقف ہوتے ہوئے بھی ان کے دورے کی احتیاطی تدابیر کے طور پر تشہیر نہیں کی گئی تھی۔

کابل پہنچنے پر ٹرمپ نے امید ظاہر کی کہ امریکہ کی طویل ترین جنگ میں طالبان جنگ بندی پر رضامند ہو جائیں گے۔

صدر منتخب ہونے کے بعد یہ ٹرمپ کا پہلا دورہ افغانستان ہے جو امریکہ اور افغانستان کے درمیان قیدیوں کے تبادلہ کے، جس سے ایک پائیدار امن معاہدے کی امیدیں روشن ہو چلی ہیں،ایک ہفتہ بعد کیا جا رہا ہے۔ٹرمپ نے میڈیا کے نمائدنوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ طالبان معاہدہ کرنا چاہتے تھے اور ہماری ان سے بات چل رہی ہے۔

ہم کہتے ہیں کہ جنگ بندی کرنا پڑے گی وہ جنگ بندی کرنا نہیں چاہتے تھے اور اب میرے خیال میں وہ جنگ بندی پر تیار ہیں اور سیز فائر کرنا چاہتے ہیں ۔طالبان رہنماؤں نے رائٹرز کو بتایا تھا کہ ان کی تنظیم نے قطر کے دارالخلافہ دوحہ میں امریکہ کے سینیئر افسران سے ملاقاتیں شروع کر دی ہیں اور وہ جلد ہی باقاعدہ مذاکرات شروع کر سکتے ہیں۔

ٹرمپ نے افغان صدر اشرف غنی سے ملاقات کی اور امریکی فوجیوں کے ساتھ تھینکس گیونگ ڈنر شروع کرنے سے پہلے انہیں مرغی یا چھوٹے شتر مرغ کی شکل کا پرندہ ٹرکی پیش کیا۔انہوں نے وہاں تعینات کچھ امریکی فوجیوں سے بات کی اور ان کے ساتھ فوٹو کھنچوائے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Trump makes surprise afghanistan trip voices hope for ceasefire in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.