ٹرمپ نے پالا بدلا، شی پنگ کو فون کر کے کہا’ انہیں ایک چین کی پالیسی قبول ہے‘

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے چین کے صدر شی جن پنگ سے کل دیر رات ٹیلی فون پر کافی طویل بات چیت کی اور ایک چین کی پالیسی کااحترام کرنے پر اتفاق کیا۔ امریکہ کی تائیوان کی حمایت کے سلسلے میں چین کافی خفا رہا ہے۔ وائٹ ہاؤس کے ترجمان نے آج بتایا کہ دونوں رہنماؤں نے کافی دیر تک بات چیت کی اور مختلف موضوعات پر تبادلہ خیال کیا۔
دراصل جاپان کے وزیر اعظم شینزو آبے فی الحال امریکی سفر پر ہیں اور مسٹر ٹرمپ کو ان کے اعزاز میں ضیافت منعقد کرنے کے سلسلے میں چین کی ناراضگی دور کرنے کے لئے انہوں نے مسٹر جن پنگ سے بات چیت کی ہے۔ چین کا کہنا ہے کہ خود مختار تائیوان پر اس کا اقتدار اعلیٰ ہے۔ چین اسی معاملے میں ایک چین کی پالیسی پر زور دیتا رہا ہے۔
ترجمان نے بتایا کہ مسٹر ٹرمپ نے مسٹر جن پنگ کے ایک چین کی پالیسی کی اپیل کو قبول کر لیا ہے اور دونوں ملکوں کے نمائندے باہمی مفادات سے منسلک مختلف مسائل پر تفصیل سے بات چیت کریں گے۔ اس بات چیت کو عام آداب قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ دونوں رہنماوں نے ایک دوسرے کو اپنے یہاں آنے کی دعوت بھی دی۔

Title: trump changes tack backs one china policy in call with xi | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply