سوشل میڈیا پر دکھائے جا رہے زخمی شامی بچے عمران کا بڑا بھائی چل بسا

حلب: شام کے حلب شہر میں ہوائی حملے میں زخمی پانچ سال کے ننھے عمران دکنیش کی زخمی حالت کی تصویر سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد ایک بار پھر یہاں کے شہریوں کی حالت زار پر پوری دنیا کی توجہ مبذول کرانے والے اس بچے کا بڑا بھائی 10 سالہ علی زندگی سے جنگ ہار گیا۔
مقامی کونسل کے ترجمان بیشر ہوی نے بتایا،”بچے کے گھر پر ہوئی بمباری میں وہ شدید زخمی ہو گیا تھا اور ہسپتال میں اس نے دم توڑ دیا۔ ڈاکٹروں نے بتایا کہ اس کے جسم سے بہت زیادہ خون بہہ گیا تھا اور اس کے کئی عضو کوشدید نقصان پہنچا تھا۔ برطانیہ کی شامی آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کے مطابق علی دیکنیش بدھ کو ہوائی حملے میں زخمی ہو گیا تھا۔
حال ہی میں سوشل میڈیا میں عمران دکنیش کی دل دہلا دینے والی تصویر جاری ہوئی تھی جس میں ایک ایمبولینس میں وہ تھکا اور بدحواس دکھائی دے رہا ہے ساتھ ہی اس کا چہرہ خون سے داغدار تھا۔
اس کی یہ تصویر جنگ زدہ شمالی شہر پر ڈھائے گئے قہر کی عکاسی کرتی ہے اور اس کو سوشل میڈیا پر بڑے پیمانے پر شیئر کیا جا رہا ہے۔ واضح رہے کہ روسی اور شامی طیارے باغیوں کے قبضے والے مشرقی شہر پر فضائی حملے کر رہے ہیں۔ آبزرویٹری نے بتایا کہ اس ماہ اس ملک میں ہوئے تشدد اور ہوائی حملے میں 448 شہریوں کی موت ہو چکی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: The brother of the iconic wounded syrian boy has died in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply