ایران میں دکاندار بھی مہنگائی کے خلاف ٹرک ڈرائیوروں کی ہڑتال میں شامل

جدہ: جوہری معاہدے سے ڈونالڈ ٹرمپ کے باہر ہوجانے اور پھر امریکہ کی جانب سے عائد کی گئی نئی پابندیوں کے باعث اقتصادی بحران پیدا ہوجانے سے پھیلتی بد امنی کے درمیان پورے ایران کے بازاروں میں اسٹور چلانے والے بھی ٹرک ڈرائیوروں کی ہڑتال میں شامل ہو گئے۔

تاجروں اور دکانداروں کا احتجاج شیراز سے شروع ہو کر تیزی سے 21صوبوں کے 50شہروں میں پھیل گیا۔حزب اختلاف کے کارکنوں کے آن لائن اپ لوڈ کیے جانے والی تصاویراور پوسٹروں میں تہران کے 50کلومیٹر مغرب میں کراج میں عام کام کاج کے اوقات میں شٹر بند دکانیں کھائی گئی ہیں۔

تبریز، اصفہان اردا بیل اور قشم میںبھی دکانیں و کاروباری ادارے بند رہے۔تجار بڑھتی قیمتوں ، ایرانی ریال کی قدر میں گراوٹ اور دیگر اقتصادی پریشانیوں کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں۔

یہ تجار ایران کے 300شہروں میں قلیل مشاہرے اور ان کی گاڑیوں کے کل پرزوں خاص طور پر ٹائروں کی بڑھتی قیمتوں کے خلاف ہڑتال کرنے والے ڈرائیوروں کے ساتھ احتجاج میں شامل ہو گئے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Storekeepers join truckers strike as iran unrest grows in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment