سینٹ پیٹرز برگ میٹرو دھماکہ کا اصل مشتبہ کرغستانی تھا

سینٹ پیٹرس برگ: روس کے سینٹ پیٹرس برگ میں دو میٹرو اسٹیشنوں کے مابین ایک ٹرین میں کل ہوئے ایک خودکش دھماکہ میں ہلاک شدگان کی تعداد بڑھ کر 11 ہوگئی ہے۔ روس کی انٹرفیکس خبررساں ایجنسی نے ذرائع کے حوالے سے یہ اطلاع دی ہے۔
سینٹ پیٹرس برگ میں بیلا روس کے لیڈر الیکڑنڈر لوکاشینکو کے ساتھ ایک میٹنگ میں شامل ہونے آئے روس کے صدر ولادیمیر پوتن نے رات دیرگئے جائے واردات کا دورہ کیا اور ہلاک شدگان کو خراج عقیدت پیش کیا۔ روسی میڈیا کے مطابق سینٹ پیٹرس برگ میں ٹرین دھماکہ کے مشتبہ ملزم کی شناخت 22سالہ اکبر جلیلوف کے طور پر کی گئی ہے۔وہ روسی تھا اور سابق سوویت یونین کی ریاست کرغستان میں اس کی پیدائش ہوئی تھی۔ وہ دھماکہ خیز مواد کو ایک بیگ میں رکھ کر میٹرو اسٹیشن لایا تھا۔ روس کے وزیرِ اعظم نے فیس بک پر ایک پوسٹ میں دھماکے کو ‘دہشت گرد’ حملہ قرار دیا ہے۔ حکام نے اس واقعے کی تفتیش شروع کر دی ہے تاہم دیگر ممکنہ وجوہات کی بھی تحقیقات جا رہی ہیں۔
سوشل میڈیا پر شائع کی جانے والی تصاویر میں سنایا اسٹیشن پر ریل گاڑی کے تباہ شدہ دروازوں اور زخمیوں کو دیکھا جا سکتا ہے۔انٹرفیکس کا کہنا ہے کہ دھماکوں میں کم ازکم 50 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ خبر رساں ادارے کے مطابق ایک دھماکے میں چھّرے بھی استعمال کیے گئے ہیں۔ روسی صدر ولادیمیر پوتن نے کہا ہے کہ تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں اور دہشت گردی سمیت تمام وجوہات مدِ نظر ہیں۔ انھوں نے کہا ہے کہ ’میں پہلے ہی خصوصی فوجی دستوں کے سربراہ سے بات کر چکا ہوں۔ وہ اصل وجہ معلوم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔‘ اطلاعات کے مطابق دھماکوں کے بعد سینٹ پیٹرز برگ میں زیرِ زمین ریلوے کا نظام بند کر دیا گیا ہے۔ ٹیکنالوجیکل انسٹیٹیوٹ اسٹیشن شہر میں میٹرو کی دو لائنز پر واقع ہے ہیں جن میں سے ایک سنہ 1955 اور دوسری 1961 سے سفری سہولت فراہم کر رہی ہے۔
سنایا پلوشیڈ میٹرو لائن ٹو پر واقع اسٹیشن ہے جس کا افتتاح سنہ 1963 میں ہوا تھا۔ سنہ 2009 میں ماسکو سے سینٹ پیٹرز برگ جانے والی ریل گاڑی میں دھماکے کے نتیجے میں 27 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ بعدازاں اس دھماکے کی ذمہ داری ایک اسلامی گروہ نے قبول کی تھی۔ واضح رہے کہ سینٹ پیٹرز برگ میں کل میٹرو میں ہوئے دھماکے میں 10 افراد ہلاک اور 50 سے زائد افراد زخمی ہو گئے تھے۔ یہ دھماکے دو زیر زمین اسٹیشنوں سنایا پلوشیڈ اور ٹیکنالوجیکل انسٹی ٹیوٹ اسٹیشن کے درمیان ہوا تھا۔ بعد میں ایک اور اسٹیشن پر بھی دھماکہ خیز سامان ملے تھے جسے ناکارہ بنا دیا گیا۔

Title: st petersburg metro bombing suspect from kyrgyzstan | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply