شمالی کوریا سے میزائل تنازعہ کسی بھی وقت فوجی ٹکراؤ میں بدل سکتا ہے:جنوبی کوریائی صدر

سیول:جنوبی کوریا کے انضمام وزارت نے آج کہا علاقے میں کشیدگی کو کم کرنے کے لئے شمالی کوریا کے ساتھ بات چیت ضرور ہونی چاہئے۔ جنوبی کوریا کی انضمام وزارت کے ترجمان لی دک ہاینگ نے میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا سب سے اہم مقصد یہ ہے کہ جنوبی کوریا اور شمالی کوریا کے درمیان مواصلات و رابطہ کا ذریعہ کھلا رہے۔“ ترجمان نے کہا کہ جنوب سے حکام کو ہر روز سرحد کے قریب واقع شمالی کوریا کے پنمنجام مواصلات دفتر جانا چاہیے اور ان کے ممکنہ رد عمل کو جاننا چاہئے۔
واضح ر ہے کہ نئے صدر مسٹر مون نے حلف لینے کے ٹھیک بعد جوہری ہتھیاروں سے لیس شمالی کوریا کے ساتھ کشیدہ تعلقات کو سدھارنے کی خواہش ظاہر کی تھی۔ تاہم ان کے حوالے سے پریذیڈنشیل بلو ہاؤس نے کہاکہ حقیقت تو یہ ہے کہشمالی حد فاصل(این ایل ایل) اور فوجی حدبندی لائن پر فوجی ٹکراؤ ہو سکتا ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ شمالی کوریاکی ایٹمی اور میزائل صلاحیتیںحال ہی میں تیزی کے ساتھ جدید ترین تکنالوجی سے آراستہ ہو گئی ہیں لیکن ہم بھی کسی سے م نہٰں ہیں اور شمالی کوریا کے حملے کا منھ توڑ جواب دینے کی ہم نہ صرف صلاحیت رکھتے ہیں بلکہ تیار بیٹھے ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: South koreas moon says high possibility of conflict with north as missile crisis builds in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
Tags: ,

Leave a Reply