علامہ شیخ عیسیٰ قاسم پر مقدمہ سے بحرین میں حالات بگڑ سکتے ہیں: ماہر مشرق وسطیٰ امورکا خیال

منامہ: ایک سماجی کارکن شبیر حسن علی نے،جومشرق وسطیٰ کے امور کے ماہر ہیں، کہا ہے کہ بحرین کی بڑی شیعہ مذہبی شخصیت علامہ شیخ عیسیٰ قاسم پر مقدمہ چلایا جانا ایک فاش غلطی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب اس امر سے واقف ہے کہ اگر مقدمہ چلایا گیا تو اس سے بحرین میں بحران پیدا ہو جائے گا ورنہ اس نے خلیج فارس کے اس چھوٹے سے ملک میں امن و قانون برقرار رکھنے کے لیے فوج نہ بھیجی ہو تی۔واضح رہے کہ بحرین کی حکومت نے علامہ شیخ عیسیٰ قاسم کوپچھلے چند ماہ سے نظر بند کر رکھا ہے، دوسری جانب بحرینی عوام علامہ شیخ قاسم کی نظر بندی کے خلاف مسلسل سڑکوں پر نکلے ہوئے ہیں۔
بحرین کی عوام اپنے سیاسی حقوق کے لیے گزشتہ چند سالوں سے احتجاج جاری رکھے ہوئے ہے۔ ان کا مطالبہ ہے کہ انکو بحرین کے سیاسی عمل میں شرکت کا حق دیا جائے لیکن بحرین کے حکمراں آل خلیفہ عوام کے اس جائز مطالبے کو تسلیم کرنے کے لیے تیار نظر نہیں آتے۔ علامہ شیخ عیسیٰ قاسم بھی عوام کی نمائندگی کرتے ہوئے گزشتہ چند سالوں سے اس مطالبہ کو دہراتے رہے ہیں۔بحرین کی حکومت علامہ شیخ عیسیٰ قاسم کے خلاف عدالت میں کیس چلانا چا رہی ہے لیکن عوام کی بھر پور مزاحمت کی وجہ سے ابھی تک اس میں کامیاب نہیں ہو سکی۔
اسی سلسلے میں گزشتہ روز عدالت میں کیس کی سماعت کا فیصلہ کیا گیا تھا لیکن عوام کے پر زور احتجاج کی بنا پر سماعت کو 12مئی تک ملتوی کر دیا گیا ہے۔واضح رہے کہ بحرین کی وزارت داخلہ نے علامہ شیخ عیسیٰ قاسم پر غیر ملکی مفادات کے تحفظ اور بحرین میں فرقہ واریت پھیلانے کا الزام لگاتے ہوئے انکی شہریت ختم کر دی تھی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sheikh qassims prosecution big al khalifah mistake expert in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply