بنگلہ دیش میں اسلامی ذہن رکھنے والوں پر تنقید کرنے والے ایک اور شخص کا سر قلم

ڈھاکہ: قانون کے ایک28سالہ ناظم الدین صمد کا، جس کے والدین لندن میں رہائش پذیر ہیں، فیس بک پر اسلام مخالف پیغام ڈالنے پر ڈھاکہ میں سرقلم کردیا گیا۔ موصول اطلاع کے مطابق یہ28سالہ نوجوان 84ملحدمضمون نگاروں میں اس ہٹ لسٹ میں شامل تھا جو کٹر اسلام پسندوں نے تیار کی تھی اور اسے بنگلہ دیش کی وزارت داخلہ کو بھیج دیا گیا تھا۔
ڈھاکہ میروپولیٹن پولس کے ڈپٹی کمشنر سید نورالاسلام نے کہا کہ کم از کم چار حملہ آوروںنے بدھ کی شب نعرہ تکبیر اللہ اکبر کہتے ہوئے ناظم الدین پر حملہ کر دیا اور اسے دبوچ کر خنجر سے اس کی گردن پر وارکیا اور وہ جیسے ہی وہ غش کھا کر زمین پر گرا ان چاروں میں سے ایک نے ایک ہاتھ کے فاصلہ سے پستول سے اس پر گولی داغ دی ۔
ناظم الدین نے موقع پر ہی دم توڑ دیا۔نورالسلام نے کہا کہ یہ ٹارگٹ کلنگ کا معاملہ ہے لیکن ابھی تک کسی گروپ نے اس کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ پولس اس امر کی تحقیقات کر رہی ہے آیا ناظم الدین کو اس کی تحریروں کے باعث ہلاک کیا گیا ہے یا ذاتی رنجش و عداوت کا شاخسانہ ہے۔ناطم الدین بنگلہ دیش کے آئین میں اسلام کو سرکاری مذہب کے طور پر رقم کیے جانے پر تنقید کرتا تھا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Secular activist who criticised islamism hacked to death in bangladesh in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply