فغان انتہاپسند غیر ملکیوں کی غلامی چھوڑیں اور اپنی بغاوت کو جہاد سے تعبیر نہ کریں: عبد الرب سیاف

کابل: ایک سابق معروف مجاہدین رہنما عبد الرب رسول سیاف نے افغانستان میں باغی گروپوں کے خلاف اپنے سخت موقف کو دوہراتے ہوئے انتہا پسند گروپوں کو تلقین کی کہ وہ بیرونی لوگوں کی غلامی چھوڑ دیں ۔ سیاف سابق سوویت یونین کی حمایت یافتہ حکومت کے خلاف مجاہدین کی کامیابی کی24ویں سالگرہ کے موقع پر منعقد ایک تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔یہ پروگرام معروف سابق جہادی رہنماو¿ں اور سابق سینیئر حکومتی اہلکاروں پر مشتمل ” مجلس برائے تحفظ و استحکام افغانستان“ (شواری حراست و ثبات افغانستان)کے زیر اہتمام منعقد کیا گیا تھا۔انہوں نے کہا کہ اندرون ملک لڑ رہے انتہا پسند اور دہشت گرد گروپ اپنی بغاوت کو جہاد نہ سمجھیں۔ انہوں نے کہا کہ بچوں عورتوں کو ہلاک کرنا ، مکانات زمیں بوس کرنا اور دیگر بھیانک جرائم کرنا جہاد نہیں ہے۔انہوں نے طالبان سے بڑے درد بھرے انداز میں کہا کہ خدا کے واسطے اپنے وطنکو مزید نہ اجاڑو اور باہری عناصر کی غلامی کرنا ترک کر دو۔یہ کوئی پہلا موقع نہیں جب سیاف نے طالبان کی گوشمالی نہ کی ہو۔ اس سے پہلے تو وہ اس حد تک چلے گئے تھے کہ عاجز آکر انہوں نے طالبان کے خلاف اعلان جہاد کر دیا تھا۔

Title: sayyaf urge militants to end slavery | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply