سعودی عرب نے شہزادہ محمد بن نایف کو محل میں نظر بند کرنے کی تردیدکی

دبئی:سعودی عرب کے ایک اہلکار نے آج نیویارک ٹائمس میں شائع ہونے والی خبر کی تردید کی ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ شہزادہ محمد بن نایف کو اپنے محل میں محصور رکھا گیاہے اور ان کو بیرون ملک کا سفر کرنے سے روک دیا گیا۔ شاہ سلمان نے حال ہی میں شہزادہ محمد بن نایف کو ولی عہد کے منصب سے برطرف کرکے اپنے بیٹے شہزادہ محمد بن سلمان کو ولی عہد مقرر کیا تھا۔ ایک ہفتہ قبل ہونے والے رد و بدل میں سابق وزیر داخلہ شہزادہ محمد بن نایف کو اپنے تمام دیگر عہدوں سے بھی فارغ کردیا گیا تھا۔
واضح رہے کہ مملکت سعودی عرب میں بطور وزیر داخلہ القاعدہ کے خلاف 2003 اور 2006 کے درمیان اپنی کارکردگیوں کے لئے امریکہ میں شہزادہ نائف کی کافی ستائش کی گئی تھی ۔شہزادہ محمد بن سلمان ملک کے وزیر دفاع ہیں اور سعودی معیشت کے پٹرول اور تیل پر انحصار کو ختم کرنے کے لئے اصلاحی ایجنڈے کے روح رواں بھی ہیں۔
نیویارک ٹائمس نے چار امریکی حکام اور سعوی شاہی خاندان کے قریبی افراد کے حوالے سے اپنی رپورٹ میں کہا لکھا تھا کہ شہزادہ محمد بن نایف کو بیرون ملک جانے سے روک دیا گیا ہے اور انہیں ساحلی شہر جدہ میں واقع اپنے محل میں محصور رکھا گیا ہے”۔ سعودی اہلکار نے نیویارک ٹائمس کی اس رپورٹ سے متعلق ایک سوال پر جواب دیتے ہوئے رائٹر کو بتایا کہ یہ 100 فیصد غلط ہے۔ تاہم، انہوں نے اس سلسلے میں مزید تفصیل بتانے سے انکار کیا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Saudi official denies former crown prince confined to palace in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply