امام حرم شیخ صالح کی گرفتاری : سعودی حکومت نے تصدیق کی نہ تردید

ریاض: سعودی عرب نے ابھی تک ان رپورٹوں کی تصدیق یا تردید نہیں کی ہے کہ مکہ میں امام حرم کے امام و خطیب شیخ صالح بن محمد الطالب کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

اتوار کے روز سعودی علماءاور مذہبی دانشوروں کی نگرانی اور کی گرفتاری کی دستاویزات رکھنے والے ”ضمیرکی آواز کے قیدیوں“کی وکالت کرنے والے گروپ نے سوشل میڈیا پر بتایا کہ شیخ صالح کو اس خطبہ پر، جس میں انہوں نے عوام میں پھیلی برائیوں کے خلاف آواز بلند کرنے کے اسلامی تقاضہ پر زور دیا تھا،گرفتار کر لیا گیا ہے۔

الجزیرہ کی بدھ کو شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق عربی خبروں کی ویب سائٹ کلیج آن لائن نے خبر دی ہے کہ شیخ صالح نے اپنے خطبہ میں تفریحی پروگراموں اور تفریح طبع کے دیگر پروگراموں میں عورت مرد کے خلط ملط ہونے کی برائی کے خلاف آواز بلند کی تھی۔

واضح ہو کہ جولائی میں سعودی عب کے ولیعہد شہزادہ محمد بن سلمان نے سی بی ایس نیوز کو ایک انٹرویو دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہمارے ملک میں ایسے انتہاپسند ہیں جو عورتوں اور مردوں کے گھلنے ملنے کو منع کرتے ہیں اور کسی مرد اور عورت کے تنہا ایک ساتھ ہونے اور کسی کام کرنے کی جگہ پر ان کے گھل مل کر کام کرنے کے درمیان فرق سمجھنے سے قاصر ہیں۔

ان میں سے بہت سے عقائد و خیالات رسول کریم محمد ﷺ کے دور کے طرز زندگی سے تضاد رکھتے ہیں۔الجزیرہ نے مزید کہا کہ گرفتاری کے چند گھنٹے بعد امام حرم کے عربی اور انگریزی ٹوئیٹر اکاو¿نڈ بند کر دیے گئے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Saudi arabia silent on reports of makkah imam being detained in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply