سعودی عرب امریکی سفارت خانہ کی یروشلم منتقلی کے فیصلہ کی شدت سے مخالفت کرتا ہے:کابینہ

جدہ: سعودی عرب نے کہا ہے کہ وہ امریکی سفارت خانہ کی تل ابیب سے یروشلم منتقلی کے امریکہ کے فیصلہ کی شدت سے مخالفت کرتا ہے۔خادم حرمین شریفین و فرمانروائے مملکت شاہ سلمان بن عبد العزیز آل سعود کی زیر صدارت وزارتی کونسل نے اپنے اجلاس میں کہا کہ مملکت امریکی سفارت خانہ کی القدس میں منتقلی کے امریکی انتظامیہ کے فیصلہ کو مسترد کرتا ہے۔

کونسل سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ یہ قدم فلسطینی عوام کے ان حقوق سے ، جن کی اقام متحدہ کی قرار دادوں کے توسط سے ضمانت دی گئی ہے،تعصب برتنے کا مظہر ہے ۔کابینہ نے مزید کہا کہ حکومت سعودی عرب پہلے ہی انتباہ دے چکی تھی کہ اس قسم کا اقدام غیر منصفانہ ہوگا اور اس سے دنیا بھر کے مسلمانوں کے جذبات مشتعل ہوں گے۔

کابینہ پیر کے روزز غزہ پٹی پر پرامن فلسطینی احتجاجیوں پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ کی بھی سعودی عرب کی جانب سے شدید مذمت کیے جانے کا اعادہ کیا۔کابینہ نے اس ضرورت پر بھی زور دیا کہ بین الاقوامی برادری تشدد روکنے اور فلسطینی عوام کے تحفظ کی ذمہ داری اپنے کندھوں پر لے۔کابینہ نے فلسطینی کاز اور عرب امن مساعی اور بین الاقوامی قرار دادوں کی روشنی میں فلسطینیوں کے حقوق کی بحالی کے تئیں مملکت کے ٹھوس موقف کا اعادہ کیا ۔

Title: saudi arabia rejects us embassy transfer to jerusalem | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply