امریکہ میں متاثرین کو معاوضہ دینے کا قانون منظور کئے جانے کی سعودی عرب نے کی مذمت

ریاض: (رائٹر) سعودی عرب کی وزارت خارجہ نے امریکہ میں دہشت گردی کے متاثرین کو معاوضہ دینے کا قانون منظور کئے جانے کی مذمت کی ہے۔ امریکی کانگریس نے اس قانون کو منظور کرکے 11 ستمبر 2001 کے حملے کے متاثرہ خاندانوں کو سعودی عرب حکومت پر معاوضہ کے لئے مقدمہ دائر کرنے کا حق دے دیا ہے۔ کانگریس میں منظورہونے والے اس قانون کے خلاف صدر بارک اوباما نے اپنے ویٹو کا حق استعمال کیا تھا، لیکن بدھ کو امریکی سنیٹ اور ایوان نمائندگان نے اکثریت سے صدر اوبامہ کے ویٹو کے خلاف ووٹ دے کر اس قانون کو اپنی منظوری دے دی تھی۔ اس قانون کی منظوری کے بعد دہشت گردانہ حملے کے متاثرین امریکی خاندان سعودی عرب کی حکومت کے خلاف مقدمہ دائر کر سکیں گے۔
سعودی پریس ایجنسی (ایس پی اے) نے وزارت خارجہ کا ایک بیان شائع کیا ہے ، جس میں کہا گیا ہے کہ کسی ملک کے اقتدار اعلی کے خصوصی استثنائی کا حق کترنے کا امریکہ سمیت تمام قوموں پر منفی اثرات پڑیں گے۔ سعودی وزارت خارجہ نے امید ظاہر کی ہے کہ امریکی کانگریس سنگین اور ناخوشگوار نتائج سے بچنے کے لئے اس قانون کو درست کرے گی۔ تاہم، بیان میں ناخوشگوار انجام کار کی کوئی تفصیلی وضاحت نہ?ں کی گئی ہے۔
قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب نے ہمیشہ ان شکوک و شبہات کو مسترد کیا ہے کہ نائن الیون کے حملہ آوروں کی کسی طورپر مدد کی تھی، جو انتہاپسند عالمی تنظیم القاعدہ کے بینر تلے انجام دیا گیا تھا اور اس میں تقریبا تین ہزار لوگ ہلاک ہوئے تھے۔ نائن الیون کے 19 حملہ آوروں میں سے 15 سعودی باشندے تھے۔ امریکہ میں ‘جسٹس اگینسٹ اسپانسرس آف ٹیررزم ایکٹ (جے اے ایس ٹی اے) کے خلاف لابنگ مہم میں سعودی عرب نے سرمایہ فراہم کیا تھا، لیکن اس ایکٹ پر ووٹنگ تک سعودی لابنگ مہم امریکی قانون سازوں کو ایسا کرنے سے باز رکھنے میں ناکام ثابت ہوئی، کیونکہ سعودی اہلکار اس قانون کی منظوری کی صورت میں کوئی مخصوصی جوابی کارروائی کی دھمکی دینے سے قاصر رہے تھے۔ دریں اثناء، امریکی کانگریس میں یہ قانون منظور ہونے کے ایک روز بعد ہی امریکی ڈالر کے مقابلے میں سعودی ریال کی قیمت میں کمی آگئی ہے۔

Title: saudi arabia condemns passage of us 911 law in Urdu | In Category: دنیا  ( world ) Urdu News

Leave a Reply