سعودی عرب قیادت والے اتحاد کی یمن پر بمباری

صنعا: سعودی عرب کی قیادت والی اتحادی فوجوں نے یمن میں تین روز کی جنگ بندی ختم ہونے کے تین گھنٹے بعد یمن کے دارالحکومت صنعامیں فضائی حملے کئے۔ ذرائع کے مطابق سعودی عرب کی قیادت والی اتحادی افواج نے دارالحکومت صنعا کے مشرقی علاقے کے کچھ فوجی کیمپ اور جنوب میں ناکدین کے نزدیک حملے کئے۔
حوثی باغیوں کے قبضے والے حدیدی علاقے میں بھی حملہ کیا گیا۔ اقوام متحدہ کے سفیر اسماعیل ولد شیخ احمد کے صنعا پہنچنے سے پہلے یہ حملے کئے گئے۔مسٹراسماعیل احمد اور حوثی نمائندوں کے درمیان ایک سیاسی حل کے اختیارات پر بحث کی توقع ہے۔ ا فریقین ایک دوسرے پر جنگ بنی کی خلاف ورزی کے الزام عائد کر رہے تھے۔
حکومتی فوج کے سربراہ محمد علی المقداشی نے کہا کہ حوثی باغیوں نے دانستہ طور پر جنگ بندی معاہدہ شکنی کی ہے جس سے ہماری فوج اور سیاسی قیادت کو یقین ہو گیا ہے کہ حوثی باغی قیام امن کے حق میں نہیں ہیں۔اقوام متحدہ اور سفارت کاروں کو یمن میں گزشتہ 19 ماہ سے جاری لڑائی ختم ہونے کی توقع ہے۔ اس لڑائی میں اب تک کم از کم دس ہزار لوگوں کی موت ہو چکی ہے۔
بین الاقوامی ممالک کے حمایت حاصل کرنے والے صدرعبد الربو منصور ہادی کی اقتدار میں واپسی کے لیے اتحادی افواج یمن کے سابق صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار فوجیوں اور حوثی باغیوں کے ساتھ مارچ 2015 سے مقابلہ کر رہی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Sanaa air raids resume as yemen truce expires say residents in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply