ایران سعودی عرب سے تعلقات بحال کرنے پر آمادہ بشرطیکہ۔۔۔۔۔۔۔

تہران: ایران کے صدر حسن روحانی نے اپنی ایک تقریر میں ،جسے قومی ریڈیو سے نشر کیا گیا،کہا ہے کہ اگر سعودی عرب یمن پربمباری بند اور اسرائیل سے تعلقات منقطع کر لے تو ایران اس سے رشتے بحال کرنے تیار ہے۔ روحانی نے بیت المقدس سے متعلق امریکی صدر کے بیان کی مذمت کی اور خطے میں امریکی پالیسیوں کو عملی کرنے میں مدد کرنے والے عناصر کو بھی خبردار کیا۔ انہوں نے کہا کہہم امریکہ کے جیسے نہیں ہیں جو اپنے وعدے سے منحرف ہو جائے، ہم اپنے وعدے ایفا کرنے والے ہیں۔ ایرانی صدر نے کہا کہ امریکی صدر مشرق وسطیٰ میں بد امنی چاہتے ہیں تاکہ اسرائیل کو موقعہ مل سکے اور وہ خود کو مضبوط کر لے۔ ایرانی صدر نے اپنے خطاب میں کہا کہ سعودی عرب، اسرائیل اور امریکہ کی مدد حاصل کرنے کی بجائے خطے کے مسلمان ممالک سے مدد حاصل کرے۔ جس سے علاقائی مسائل کا حل نکل سکتا ہے۔حسن روحانی نے کہا: ہم بیت المقدس اور فلسطینی عوام کی حمایت کے لیے ہر ممکن اقدام کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ بیت المقدس مسلمانوں سے متعلق ہے اور اسلام کی سرزمین ہے۔واضح رہے کہ سعودی عرب میں ایک شیعہ مذہبی رہنما کو سزائے موت دینے کے خلاف احتجاج میں ایران میں سعودی سفارت خانہ پر ایرانی مظاہرین کے حملے کے بعدجنوری2016میں ایران سے سفارتی تعلقات منقطع کر لیے تھے۔گذشتہ ماہ حوثی قبائلیوںکے ذریعہ ریاض پر راکٹ حملہ کے بعد، جسے سعودی عرب نے راستے میںہی تباہ کر دیا تھا،دونوں ممالک میں کشیدگیاور زیادہ ہو گئی تھی۔

Title: rouhani ready to restore ties with saudi arabia | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply