پوپ کے ساتھ ترک صدراردوغان کے تبادلہ خیال کے پیش نظر روم میں احتجاجی مظاہروںپر پابندی

ویٹیکن سٹی : ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان کی پیر کے روز پوپ فرانسس سے ملاقات کے موقع پر وسطی روم میں اردوغان کے خلاف ہونے والے اس احتجاج پر پابندی عائدکر دی گئی جوشام میں کرد ملیشیا کے خلاف ترکی کی فوجی کارروائی پر اظہار ناراضگی کے طور پر کیا جانے والا تھا۔
59سال میں کسی ترک رہنماکے اس قسم کے پہلے دورے کے لیے اٹلی کے حکام نے پیر کی شام میں اردوغان کی واپسی تک ہر قسم کے احتجاج پر پابندی لگا دی۔
اردوغان کے دورہ کے پیش نظر پولس کے تقریباً3500اہلکار جگہ جگہ تعینات کر دیے گئے۔اس موقع پر اٹلی میں کردوں کی نمائندہ تنظیم کے پرچم تلے200کارکنان نے ویٹی کن سٹی سے متصل علاقہ میں دھرنا دینے اور احتجاج کرنے کا پروگرام بنایا تھا۔
واضح رہے کہ ترکی نے شامی کرد تحفظ یونٹوں ملیشیا کے خلاف، جسے ترکی دہشت گرد گروہ اور ترکی علاقہ کے لیے ایک خطرہ سمجھتا ہے20جنوری سے،”اولیو برانچ“نام سے اپنی کارروائی شروع کر رکھی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Rome bans protests ahead of erdogan talks with pope in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply