اگر میرے مستعفی ہونے سے افغانستان کے حالت سدھر سکتے ہیں تو میں استعفیٰ دینے تیار ہوں: عبداللہ عبداللہ

کابل:افغانستان کے چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ نے کابل حملے کے بعد اپنے اوپر ہونے والی تنقید کے بعد کہا ہے کہ اگر میرے استعفی دینے سے افغانستان کے حالات بہتر ہو سکتے ہیں تو میں اس کام کے لیے بھی تیار ہوں، گزشتہ دن سینیٹ کے نائب کے بیٹے کی تدفین میں بھی،جس میں عبداللہ عبداللہ سمیت افغانستان کی بڑی سطح کی شخصیات بھی شریک تھیں، خودکش دھماکے کئے گئے ۔ جنازے کے بعد عبداللہ عبداللہ نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر میرے جانے سے افغانستان میں امن قائم کیا جا سکتا ہے تو میں افغانستان کی عوام کی خاطر استعفیٰ دینے کے لیے آمادہ ہوں۔
انہوں نے کہا کہ میں اس حکومت میں اپنے عہدے کو ذمہ داری سمجھتا ہوں نہ یہ کہ اس کو اپنے لیے کوئی بڑا مقام سمجھتا ہوں۔جنازہ کے مراسم میں شدید ترین حفاظتی انتظامات کے باوجود تین خود کش حملہ آور اپنی کارروائی کرنے میں کامیاب ہو گئے، عبداللہ عبداللہ نے سیکیورٹی افسران کو مخاطب قرار دیتے ہوئے کہا کہ سخت ترین سیکیورٹی انتطامات کے باوجود خودکش بمبار کیسے مجمع کے اندر داخل ہو گئے۔افغانستان کے بعض تجزیہ کاروں کا خیال ہے کہ یہ حملے خود اشرف غنی اور افغانستان کی سلامتی کونسل نے کروائے ہیں تاکہ افغان صدر کے سیاسی ناقدین کو کنارے لگایا جا سکے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ready to quit if resignation can boost security ceo abdullah abdullah in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply