قطر میں محنت کشوں کے قوانین میں اصلاحات، کم از کم اجرت بھی مقررکی جائے گی

دوحہ: قطر نے کم از کم اجرت کا تعین سمیت محنت کشوں کے قوانین میں وسیع پیمانے پر اصلاحات کرنے پر اتفاق کر لیا۔ان اصلاحات کا اعلان انٹرنیشنل لیبر آرگنائزیشن کے ،جو 2022کے فٹبال ورلڈ کپ کی میزبانی کے باعث ان اصلاحات کر لیے قطر پر مسلسل دباؤ ڈالے ہوئے تھی، اجلاس کے موقع پر کیا گیا ہے۔
واضح رہے کہ اس اجلاس میں اقوام متحدہ کا ادارہ قطر میں غیر ملکی مزدوروں کے ساتھ سلوک کے حوالے سے باقاعدہ تحقیقات شروع کراسکتی ہے۔ دوسری جانب اقوام متحدہ نے قطر کو غیر ملکی مزدوروں کی حالت کو بہتر بنانے کے حوالے سے نومبر 2017 تک کہ مہلت دے رکھی تھی۔ جس کے بعد باضابطہ تحقیقات شروع کرنے کے بارے میں متنبہ کر رکھا تھا۔قطر حکومت کی جانب سے ایک سینٹرل اتھارٹی مزدوروں کے تمام معاملات کو دیکھے گی۔
ورک کنٹریکٹ کی شرائط پر نظر رکھے گی تاکہ ملازمت کے لیے سخت شرائط نہ رکھی جاسکیں۔ کم سے کم اجرت کا تعین کیا جائے گا۔ غیر ملکی ملازمین اپنی شکایت سینٹرل اتھارٹی کے نمائندے تک پہنچا سکیں گے۔واضح رہے کہ قطر میں پندرہ لاکھ غیر ملکی مزدور کام کرتے ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق 2022 کے فٹبال ورلڈ کپ کے تعمیراتی کاموں میں ناقص انتظامات اور مزدوروں کو سہولیات فراہم نہ کیے جانے کے سبب اب تک بارہ سو مزدور ہلاک ہوچکے ہیں۔
لیکن اب وہاں حالات بدل رہے ہیں اورمزدوروں کی عالمی یونین کے جنرل سیکرٹری شیرن بورو نے کہا ہے کہ قطر نے حقیقی اصلاحات اور جدید دور کی غلامی کو ختم کرنے کا وعدہ کیا ہے، جس کا ہم خیر مقدم کرتے ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Qatar agrees to introduce minimum wage as part of labour reforms in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply