ترکی میں دو ٹیچروں کے گرفتاری کے خلاف مظاہرہ کرنے پر61افراد گرفتار

انقرہ:ترکی میں بعد انقلاب پکڑ دھکڑ کارروائی کے دوران گرفتار کیے گئے دو اساتذہ کی گرفتاری کے خلاف راجدھانی انقرہ میں مظاہروں میں حصہ لینے پر 61 افراد کو پولیس نے گرفتار کر لیا۔ سی این این ترک کی خبر کے مطابق ڈیڑھ لاکھ سرکاری ملازمین کی معطلی یا برطرفی کے سرکاری حکم کی مخالفت میں بھوک ہڑتال کر رہے35سالہ لٹریچر پروفیسر نوری گلمین اور28سالہ پرائمری اسکول ٹیچر سمیع اوزاکا کی گرفتاری کے خلاف یہ مظاہرے کیے جارہے ہیں ۔ مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پولیس کو پانی کی بوچھار اور پیپر اسپرے کا سہارا لینا پڑا۔
پولیس نے کچھ مظاہرین کو وہاں سے زبردستی ہٹا دیا۔ اگرچہ اس کا مظاہرین پر کوئی اثر نہیں ہوا اور وہ پھر سے مظاہرہ کرنے لگے جس کے بعد پولیس نے 61 مظاہرین کو حراست میں لے لیا۔ ترکی میں گزشتہ سال ہوئے ناکام فوجی بغاوت کی کوشش کے بعد بڑے پیمانے پر سرکاری ملازمین کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ بھوک ہڑتال کر رہے اساتذہ نے کہا کہ ان کی بھوک ہڑتال کا مقصد ماہرین تعلیم، سرکاری ملازمین، ججوں اور فوجیوں سمیت تقریباً ڈیڑھ لاکھ سرکاری ملازمین کی حالت زار کو اجاگرنا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Police detain at least 61 people in ankara protest in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply