ایران کاجوہری معاہدہ ناقابل گفت و شنید و نظر ثانی ہے: علی اکبر ولایتی

تہراان: ایران کی تشخیص مصلحت نظام کے ایک سینیئر رکن علی اکبر ولایتی نے کہا ہے کہ جوہری معاہدہ ناقابل گفت و شنید ہے اورایران اب مغرب کے دباؤمیں نہیں آئے گا۔
انہوں نے کہا ایران اور عالمی طاقتوں کے مابین2015میں جو جوہری معاہدہ وا تھا وہ مشترکہ جامع منصوبہ عمل کے نام سے معروف ہے۔ معاہدہ کی روسے ایران اقتصادی پابندیوں میں نرمی کے عوض اپنے ایٹمی پروگرام کو بند کردینے پر رضامند ہو گیا۔
یہ معاہدہ اب ناقابل گفت و شنید یا ناقابل نظر ثانی ہے۔اور ایران اب کوئی دوسری شرط نہیں مانے گا۔اور خطہ میں ایران کی موجودگی کے حوالے سے دفاعی امور جیسے معاملات میں مغرب کے دباؤ میں نہیںآئے گا۔
انہوں نے مزید کہا کہ ایران معاہدہ کے تحت اپنی ذمہ داریوں کا پابند ہے۔لہٰذا اب اس معاہدے کی تحریر میں زیر زبر کی بھی تبدیلی نہیں ہوگی۔

Title: no condition on jcpoa to be accepted senior iranian official | In Category: دنیا  ( world )
Tags: ,

Leave a Reply