میانمار کے راخین میں خونریز جھڑپوں سے ہزار وں افرا نقل مکانی کرنے پر مجبور

کاکس بازار (بنگلہ دیش) :میانمار کے شمال مغربی صوبہ راخین میں گزشتہ پانچ برسوں میں خونریز لڑائی چھڑ گئی ہے، جہاں گزشتہ جمعہ سے اب تک 104 افراد ہلاک ہوئے ہیں اور ہزاروں خوفزدہ شہریوں کو لڑائی سے فرار ہونے پر مجبور ہونا پڑا ہے، جبکہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی امدادی ایجنسیوں کو اپنا عملہ واپس بلانا پڑا ہے۔
راخین میں روہنگیا باغی گروپوں نے جمعہ کے روز 30 پولس پوسٹوں اور ایک فوجی کیمپ پر حملے کئے تھے، جس کے بعد وسیع پیمانے پر پرتشدد جھڑپیں شروع ہوگئی ہ?ں، جس سے خوفزدہ شہریوں کو علاقے سے فرار ہونا پڑر ہا ہے۔ گزشتہ سال اکتوبر سے میانمار کے شمال مغربی صوبہ راخین میں فوج کی وحشیانہ کارروائی کے بعد سے جاری کشیدگی میں گزشتہ جمعہ کے حملے کے بعد اچانک اضافہ ہوگیا۔
بدھسٹوں کی اکثریت والے ملک میانمار کے شمال مغربی صوبہ راخین میں گیارہ لاکھ روہنگیائی مسلمانوں کے مسئلے سے نمٹنا ملک کی نوبل امن انعام یافتہ لیڈر آنگ سان سوکی کے لئے سب سے بڑا چیلنج بن گیا ہے، جنہوں نے روہنگیا باغیوں کے حملے کی مذمت کی ہے اور سلامتی دستہ کی کارروائی کی ستائش کی ہے۔ مغربی ناقدین کی طرف سے انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا ہے کہ وہ طویل عرصہ سے ظلم و تشدد کے شکار روہنگیائی مسلمانوں کے مسئلے پر کھل کر نہیں بول رہی ہیں اور وہ صرف فوج کے جوابی تشدد کا دفاع کررہی ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Myanmar boosts security in rakhine state as violence continues in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
Tags: ,

Leave a Reply