لیبیا میں بحیرہ روم میں ڈوب کر ہلاک ہونے والے90تارکین وطن میں زیادہ تر پاکستانی ہیں

جنیوا: اقوام متحدہ کی تارکین وطن ایجنسی کے مطابق لیبیا میں بحیرہ روم کے ساحل پر تارکین وطن کے ساتھ ہونے والے تازہ ترین سانحہ میں کم از کم90افراد ہلاک ہو گئے۔ایجنسی نے اپنے بیان میں کہاکہ جمعہ کو یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب وہ کشتی جس میں یہ90افراد سوارتھے جمعہ کی صبح لیبیا کے ساحل کے قریب پلٹ گئی۔
دس افراد کی لاشیں بہہ کر لیبیائی ساحل پر آگئیں۔بین الاقوامی تنظیم برائے تارکین(آئی او ایم) وطن(آئی او ایم) اس حادثہ میں دو افراد بچ گئے اور وہ تیرتے ہوئے ساحل پر آگئے جبکہ ایک تیسرے شخص کو ماہی گیروں کی ایک کشتی نے بچالیا۔ اس سے قبل لیبیائی شہر زوراوا میں سیکورٹی حکام نے کہا کہ جو تین افراد زندہ بچے ہیں ان میں دو لیبیائی اور ایک پاکستانی ہے۔
آئی او ایم نے اس نام نہاد وسطی بحیر روم کے راستے سے، جو لیبیا کو اٹلی سے جوڑتا ہے، یورپ آنے کے لیے تارکین وطن کو درپیش شدید خطرات کا بارہا انتباہ دیاتھا ۔اس حادثہ میں زندہ بچ جانے والوں نے امددای کارکنوں کو بتایا کہ زیادہ تر تارکین وطن پاکستانی ہیں ۔ جو ایک بڑے گروقپ کی شکل میں شمالی افریقہ سے اٹلی جا رہے تھے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Mostly pakistanis among 90 migrants feared dead in shipwreck off libya in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
Tags: ,

Leave a Reply