ایران کا بالسٹک میزائیل تجربہ سلامتی کونسل کی حالیہ قرار داد کی خلاف ورزی نہیں ہے:روس

ماسکو:روسی وزارت خارجہ کے سربراہ برائے عدم توسیع و اسلحہ کنڑول میخائیل اولیانوف نے ایک بار پھر اس کا اعادہ کیا کہ ایران کا حالیہ بالسٹک میزائل کا تجربہ کسی طرح سے بھی اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی جولائی میں اختیار کردہ قرارداد کی خلاف وزی نہیں ہے۔
روسی افسر نے مزید کہا کہ روس کو ایسا کوئی جواز نظر نہیں آتا جو ایران کے بالسٹک میزائل تجربہ کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ایجنڈے میںشامل کیا جائے کیونکہ یہ بے بنیاد بات ہے۔الیانوف نے یہ بھی کہا کہ اقوم متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار داد2231میں تجربات پر کوئی پابندی نہیں لگائی گئی ہے۔روسی افسر کا یہ بیان ایسے وقت میں آیا ہے جب امریکہ اور اس کے یورپی حلیف ممالک ایران کے حالیہ بالسٹک میزائل تجربات کے حوالے سے قوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس بلوانا چاہتے ہیں کیونکہ ان کا دعویٰ ہے کہ ایران نے یہ تجربات کر کے جولائی میں منظور کی گئی سلامتی کونسل کی قرار داد کی خلاف ورزی کی ہے۔
واضح رہے کہ پاسداران انقلاب نے اپنے میزائلوں کی صلاحیتوںکو پرکھنے کے لیے 9مارچ کو دو بالسٹک میزائلوں کا کامیاب تجربہ کیا تھا۔ایران کا کہنا ہے کہ اس کے میزائل محض دفاع کے لیے ہیں اور اور اس طرح بنائے گئے ہیں کہ صرف روایتی دھماکہ ہی کر سکتے ہیں۔وہ تباہی مچانے والے نہیں ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Moscow says putting irans ballistic missile tests on unsc has no basis in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply