افغانستان میں 75طالبان ہلاک 40سے زائد زخمی

کابل: افغانستان کے فریاب صوبہ میں سلامتی دستوں اور دہشت گردوں میں خونیں تصادم میں کم و بیش 115افراد ہلاک یا زخمی ہو گئے ۔ان میں انتہاپسند اور سلاتی دستوں کے اہلکار بھی شامل ہیں۔

شمال میں افغان فوج کے 209ویں شاہین کور کے مطابق پیر کے روز گھوڑ ماک اور قیصر اضلاع کے درمیان سلامتی دستوں کے ایک قافلہ پرطالبان دہشت گردوں نے گھات لگا کر حملہ کر دیا۔ ایک ذریعہ کے مطابق طالبان انتہاپسندوں کے گھات لگا کر کیے گئے حملہ نے خطرناک رخ اختیار کر لیا اور سلاتی دستوں نے پوری قوت سے جوابی حملے شروع کر دیے۔

یہ خونیں تصادم ڈھائی گھنٹے تک جاری رہا جس میں کم ا زکم73انتہاپسند ہلاک اور41دیگر زخمی ہو گئے۔شاہین کور کے مطابق قیصر ملا شیریں کے طالبان کے ضلعی سربراہ اور چھ دیگر طالبان کمانڈرز بھی ہلاک شدگان میں شامل ہیں۔

ان کمانڈروں کی شناخت ملا قیوم، قاری ثور گل، مولوی جان محمد اور مولوی نور محمد کے طور پر کی گئی ہے۔اس حملہ میں سلامتی دستوں کے چار اہلکار بھی ہلاک اور سات دیگر زخمی ہو گئے ۔ گھات لگا کر کیے گئے حملہ میں ایک ہموی بکتر بند گاڑی اور ایک رینجر گاری تباہ ہو گئی جبکہ تین بکتر بند گاڑیون کو نقصان پہنچا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Militants security personnel among 115 dead wounded in faryab clash in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply