اقوام متحدہ کے سابق سربراہ کوفی عنان روہنگیائی مسلمانوں کے حالات کا مطالعہ کرنے برما پہنچے

رنگون:(یو این آئی) روہنگیا کے مسلمانوں کی حالت زار کا جائزہ لینے کے لئے اقوام متحدہ کے سابق سربراہ کوفی عنان کے زیر قیادت ایک ٹیم برما کی رخائن ریاست پہنچی۔ جہاں فوج نے مسلمانوںکے خلاف کارروائی کرکے کم از کم 86 افراد کو ہلاک کردیا جبکہ 10 ہزار افراد نے جان بچا کر کر بنگلہ دیش میں پناہ لی ہے۔عنان ایک دن ریاستی راجدھانی ستوے میں گزاریں گے اس کے بعد وہ شمالی میانمار جائیں گے۔
رخائن میں 2012 کے فسادات میں سو سے زیادہ افراد مارے گئے تھے جس کے بعد سے رخائن بودھ اور روہنگیا مسلم علاحدہ علاحدہ رہتے ہیں۔تازہ تشدد سے آٹھ ماہ پرانی آنگ سان سوکی حکومت کے لئے بہت بڑامسئلہ پیدا ہوگیا ہے اور نوبل انعام یافتہ لیڈر پر پھر سے بین الاقوامی نکتہ چینی ہونے لگی ہے کہ انہوں نے روہنگیا اقلیت کی کوئی مدد نہیں کی ہے۔
انہیں شہریت سے بنیادی خدمات تک رسائی سے محروم رکھا گیا ہے۔ عنان سمیت تین غیر ملکی کمشنروں کا ہوائی اڈے پر رخائن کے وزیراعلی نی پو اور 100 کے قریب مظاہرین نے استقبال کیا۔ مظاہرین نے جو تختیاں اٹھا رکھی تھیں۔ ان پر لکھا تھا ” کوفی عنان کمیشن“ نہیں چاہتے۔ مظاہرین سے زیادہ وہاں پولیس والے تھے جو بلٹ پروف جیکٹیں پہنے ہوئے تھے اور رائفلیں اٹھائے ہوئے تھے۔ مظاہرین میں شامل ایک کاشتکارماونگ کھن نے کہا کہ رخائن ایک داخلی معاملہ ہے۔ ہم باہر والوں کی مداخلت قبول نہیں کریں گے۔ ہمیں اپنے مسائل کے لئے غیر ملکیوں کی ضرورت نہیں ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Kofi annan led team visits myanmars northwest amid rohingya crisis in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply