امریکہ داعش کی مدد سے افغانستان کو اسلحہ تجربہ گاہ کے طور پر استعمال کر رہا ہے:حامد کرزئی

کابل: افغانستان کے سابق صدر حامد کرزئی نے کہا ہے کہ امریکہ اور دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) کے درمیان کوئی لڑائی وڑائی نہیں ہے بلکہ دونوں میں نورا کشتی چل رہی ہے۔ اورامریکہ داعش کے تعاون سے ہی افغانستان کی سرزمین کو اپنا اسلحہ آزمانے کے لیے استعمال کر رہا ہے۔انہوں نے اس ضمن میں حال ہی میں ننگر ہار صوبہ میں اب تک کے اس سب سے بڑا غیر نیوکلیائی بم ، جس میں کم ا زکم95دہشت گرد ہلاک ہوئے تھے، گرانے کا حوالہ دیا اور کہا کہ یہ افغان عوام پر ظلم کی انتہا ہے۔
کرزئی نے مزید کہا کہ داعش نے خارجی کمپنیوں کی طرح امریکہ کے ساتھ معاہدہ کر رکھا ہے۔اور وہ رہائشی علاقوں سے شہریوں کو باہر نکال کر امریکہ کے لیے مناسب ماحول فراہم کرتی ہے تاکہ امریکہ اپنے اسلحہ کی آزمائش کر سکے۔انہوں نے مزید کہا کہ داعش افغانستان میں واشنگٹن کے مفادات کے لیے کام کرتی ہے۔ امریکہ کا داعش کے خلاف لڑنے کا دعوی جھوٹا ہے کیونکہ دو سال پہلے سے مشرقی افغانستان کے لوگ پاکستان کے بارڈر سے داعش کے افغانستان میں داخل ہونے سے پریشان تھے لیکن امریکہ نے کوئی اقدام نہیں کیا۔
ان کا کہنا تھا کہ خارجی فوجوں کی سربراہی امریکہ کے پاس ہے لیکن امریکہ نے داعش کو مشرقی افغانستان میں گھسنے بھی دیا اور ان کو محفوظ پناہگاہیں بھی فراہم کیں اور دو سال تک داعش کے خلاف کوئی کاروائی نہ کی۔حامد کرزئی نے دعوی کیا کہ امریکہ داعش کے خلاف جنگ کے بہانے سے افغانستان کو اپنے اسلحہ کو ٹیسٹ کرنے کے لیے لیبارٹری بنانا چاہتا ہے۔

Title: karzai says us using afghanistan as weapons testing ground | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply