قیدیوں کے تبادلے کے بعد اب افغان امن مذاکرات بحال ہوجانے چاہئیں: حامدکرزئی

کابل: افغانستان کے سابق صدر حامد کرزئی نے کہا ے کہ طالبان اور امریکہ کے درمیان قیدیوں کے تبادلہ کے بعد اب افغان امن مذاکرات شروع ہو جانے چاہئیں۔

کرزئی نے ٹوئیٹر کے توسط سے کہا کہ مجھے امید ہے کہ اسلامی تحریک طالبان اور امریکہ کے درمیان قیدیوں کا تبادلہ افغانستان میں امن بحال کرنے میں معاون ہوگا۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں تمام فریقوں سے پر زور اپیل کرتا ہوں کہ افغان امن مذاکرات جتنی جلد ممکن ہو سکیں شروع کر دیے جائیں۔

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے بھی دو مغربی نژاد پروفیسروں کی رہائی کا خیرمقدم کیا اور امید ظاہر کی کہ قیدیوں کے تبادلہ سے افغانستان میں جنگ بندی کی راہ ہموار ہو گی۔

ٹرمپ نے ٹوئیٹ کیا کہ ہم کیون کنگ اور ٹم ویکس کی طالبان کی قید سے رہائی پر ان کے گھر والوں کی خوشیوں میں شامل ہیں ۔

علاوہ ازیں صدر اشرف غنی سے بھی ان کی دلیرانہ حمایت کا اظہار تشکر کرتے ہیں۔

طالبان گروپ نے افغان حکومت کی قید سے رہا ہو نے والے حقانی نیٹ ورک کے لیڈروں کی قطر کے دارالخلافہ دوحہ پہنچنے کے بعد امریکی یونیورسٹی آف افغانستان کے دونوں پروفیسروں کو، جنہیں طالبان نے کابل سے اگست 2016میں اغوا کر لیا تھا، رہا کر دیا تھا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Karzai calls for early resumption of intra afghan talks following prisoners exchange in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.