تین سالہ بیٹی اور شوہر کو چھوڑ کرماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے والی پہلی خاتون دنیا کو خیرباد کہہ گئیں

ٹوکیو: 41سال قبل اپنی تین سالہ بچی ، شوہر اور تمام رشتہ داروں کو چھوڑ کر دنیا کی بلند ترین چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے کے لیے نکلنے والی خاتون کوہ پیما جنکو تبائی 77 سال کی عمر میں انتقال کر گئیں۔ ایورسٹ سر کرنے والی یہپلی خاتون جوکینسر کے مرض میں مبتلا 77 رہ کر داعی اجل کو لبیک کہہ گئیں، 1975 میں اس وقت جاپانی خاتون ایورسٹ مہم کا حصہ تھیں جب انہوں نے آٹھ ہزار 850 میٹر(29ہزار 35 فٹ) بلند چوٹی ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے کا اعزاز حاصل کیا۔2012 میں جاپان ٹائمز کو دیے گئے انٹرویو کے دوران انہوں نے ہمالیہ کے پہاڑوں کو سر کرنے کیلئے نکلنے والی خواتین کی مہم کے بارے میں لوگوں کے رویوں کا ذکر کیا۔
انہوں نے کہا تھا کہ 1970 کی دہائی میں جاپان میں یہ عام طور پر تصور کیا جاتا تھا کہ مردوں کو ہی گھر کے باہر کام کرنا چاہیے اور خواتین کو گھر پر رہنا چاہیے۔جنکو تبائی ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے کیلئے اپنی تین سالہ بیٹی کو شوہر اور رشتے داروں کے پاس چھوڑ کر مہم پر روانہ ہوئی تھیں۔ انہوں نے کہا تھا کہ چاہے لوگ کچھ بھی کہیں لیکن ماؤنٹ ایورسٹ سر کرنے کے حوالے سے میرے دماغ میں کبھی بھی کوئی سوالات نہیں پیدا ہوئے۔ واضح رہے کہ جنکو تبائی نے 1992 میں دنیا کے تمام براعظموں کی اونچی چوٹیوں کو سر کرنے والی دنیا کی پہلی خاتون بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔بعدازاں وہ اپنی زندگی میں پہاڑوں کے ماحول کے تحفظ کیلئے مہم چلانے کے ساتھ ساتھ چوٹیاں سر کرنے میں مصروف عمل رہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Junko tabei first woman to climb mount everest dead at 77 in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply