حسن روحانی اور رجب طیب اردوغان کی تہران میں مشترکہ پریس کانفرنس

تہران: ترکی اور ایران نے خطہ میں قیام امن اور عراقی کردستان میں ریفرنڈم کے حوالے سے ایک دوسرے کے خیالات و نظریات سے نہ صرف اتفاق کیا بلکہ ان دونوں معاملات سمیت کئی امور پر دونوں ہم آہنگ بھی رہے۔
ترکی کے صدر رجب طیب اردوغان نے اپنے دورہ ایران کے اختتام پر ایرانی صدر ڈاکٹر حسن روحانی کے ساتھ تہران میں مشترکہ پریس کانفرنس کی جس میں دونوں سربراہان نے بتایا کہ انہوں نے خطے میں امن و امان کے قیام، شام میں جاری بحران اور عراقی کردستان میں غیر قانونی ریفرنڈم کے متعلق تفصیلی بات چیت کی ہے۔
پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے صدر حسن روحانی نے کہا ہے کہ ایران اور ترکی علاقے کی جغرافیائی سرحدوں میں کسی تبدیلی کو قبول نہیں کریں گے اور ہم علاقے میں قومی و مذہبی سمیت کسی بھی تقسیم کی نفی کرتے ہیں۔حسن روحانی نے ایران اور ترکی کے درمیان دوطرفہ تعلقات کو مزید توسیع دینے پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ دونوں ممالک کی حکومتیں تمام شعبوں میں تعلقات کو مزید فروغ دینے میں پر عزم ہیں۔
پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر نے کہا ہے کہ ترکی اور ایران عراقی کردستان میں ہونے والے ریفرنڈم کو غیر قانونی سمجھتے ہیں جبکہ اس حوالے سے دونوں ممالک کا مشترکہ موقف ہے۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ ترکی اور ایران کے درمیان دوستانہ تعلقات ایک مثبت سمت کی جانب تیزی سے آگے بڑھ رہے ہیں۔
واضح رہے کہ مشترکہ پریس کانفرنس سے قبل دونوں صدور کی زیر صدارت دوطرفہ وفود کے باضابطہ مذاکرات بھی ہوئے ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Joint press release from the president erdogan and rouhani in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply