ایران نے پھر میزائیل تجربہ کیا، اس پر پابندیاں اور سخت کی جائیں: اسرائیلی وزیر اعظم

یروشلم: اسرائیل کے وزیر اعظم بنیامین نتن یاہو نے آج ایران کے ایک اور بیلسٹک میزائل تجربہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ ماہ اپنے دورہ امریکہ کے دوران وہ امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ایران کے خلاف پابندیاں سخت کرنے پر غور کرنے کے لئے کہیں گے۔ وائٹ ہاؤس کی جانب سے مسٹر نیتن یاہو کے امریکہ دورے کا اعلان ہونے کے فورا بعد ہی انہوں نے ٹوئٹر پر کہا، “ایران نے پھر بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے۔ یہ واضح طور پر سلامتی کونسل کی قرارداد کی خلاف ورزی ہے۔
امریکی حکام نے بھی آج اس بات کی تصدیق کی تھی کہ ایران نے درمیانہ فاصلے کی بیلسٹک میزائل کا تجربہ کیا ہے جس نے تقریبا 1000 کلو میٹر کی دوری طے کی۔ مسٹر نیتن یاہو نے کہا، “میری صدر ٹرمپ کے ساتھ ہونے والی ملاقات کے دوران میں ایران پر پابندی کے بارے میں پھر سے غور کرنے کی اپیل کروں گا۔ ایران کی جارحیت کا جواب بغیر ردعمل ظاہر کئے نہیں دیا جا سکتا۔”
خیال رہے کہ اوباما انتظامیہ نے ایران کے بیلسٹک میزائل ٹیسٹ کو جوہری معاہدے کی خلاف ورزی نہیں مانا تھا جبکہ مسٹر ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ تہران کے میزائل پروگرام پر روک لگائیں گے۔ ایران کے جوہری پروگرام پر روک لگانے سے متعلق اقوام متحدہ کی قرارداد کے مطابق ایران آٹھ برسوں تک جوہری ہتھیار لے جانے والے میزائل کا تجربہ نہیں کر سکتا۔ وہیں ایران کا کہنا ہے کہ یہ ٹیسٹ جوہری ہتھیاروں کو لے جانے والے میزائل کا نہیں ہے۔

Title: israel p m netanyahu vows to push trump on iran sanctions | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply