طالبان نے سلامتی دستوں کو کھانا پانی پہنچانے والے ایک بچے کا سر قلم کر دیا

کابل: دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) سے وابستہ انتہا پسندوں نے افغانستان کے شمالی جوزجان صوبہ میں افغان سلامتی دستوں کی مدد کرنے کے الزام میں ایک معصوم بچہ کا سر قلم کر دیا۔
مقامی حکام نے منگل کے روز اس بہیمانہ واردارت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ یہ واردات درزاب کے جس علاقہ میں انجام دی گئی ہے وہاں متعدد انتہا پسندوں کا غلبہ ہے۔
صوبائی سیکورٹی سربراہ عبد الحفیظ خاشی نے کہا کہ اس بچے کا، جس کی عمر بمشکل تیرہ چودہ سال ہو گی محض اس لیے سر کاٹ دیا گیا کیونکہ وہ علاقہ میں سلامتی دستوں کے لیے کھانا پانی اور چائے لانے کا کام کر دیا کرتا تھا۔
خاشی نے مزید کہا کہ مقتول بچے کی شناخت رحیم داد کے طور پر کی گئی ہے اور وہ کوئی اجرت لیے بغیر فی سبیل اللہ ان کے کام کر دیا کرتا تھا۔

Title: isis militants behead a child on charges of helping afghan forces | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply