افغانستان میں داعش انتہاپسندوں نے عورتوں کے بھیس میں گھومنا شروع کر دیا،چار برقعہ پوش گرفتار

کابل: دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) کے انتہاپسندوں نے اپنی تخریبی کارراوائیاں کرنے اور افغان فوج کو چکمہ دینے کے لیے اب خواتین کے بھیس میں افغانستان کے صوبوں میں گھومنا پھرنا اور ہدف تلاش کرنا شروع کر دیا ہے۔

اس کا علم اس وقت ہو ا جب بدھ کے روز افغان سلامتی دستوں نے داعش خراسان کے چار انتہاپسندوں کوگرفتار کیا۔ یہ چاروں برقعے اوڑھ کرننگر ہار صوبہ میں فوجی کارروائی سے بچ کر فرار ہونے کی کوشش کر رہے تھے ۔

ننگر ہار کے گورنر کے دفتر سے جاری بیان کے مطابق افغان سلامتی دستوں نے عورتوں کے بھیس میں جارہے ان انتہاپسندوں کو اچین ڈسٹرکٹ میں پڑا۔

ننگر ہار مشرقی افغانستان کا شورش زدہ خطہ ہے جہاں دور افتادہ مقامات پر طالبان اور داعش خراسان دونوں گروپ سرگرم ہیں۔اور اکثر و بیشتر یہ دونوں گروپ صوبہ میں حملے کرتے رہتے ہیں۔

دریں اثان افغان سلامتی دستوں نے صوبہ میں حکومت مخالف انتہا پسند گروپوں کے خلاف کارروائی معمول کے مطابق جاری رکھی۔امریکی فوجیں بھی ملک کے شورش زدہ علاقوں میں طالبان اور دیگر تخریبی گروپوں کی سرکوبی کے لیے فضائی حملے کر رہی ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Isis fighters disguised as women caught by afghan forces in nangarhar in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.