عراق میں ایران کے حمایت یافتہ پارلیمانی بلاک الفتاح نے مخلوط حکومت سازی کی کوششیں شروع کر دیں

بغداد : عراق میں ایران کے حمایت یافتہ پارلیمانی بلاک الفتاح پارلیمانی انتخابات میں دوسرا سب سے بڑا گروپ بن کر ابھرا ہے ۔اور اب اس نے ایک مخلوط حکومت تشکیل دینے کے لیے بااثر شیعہ رہنما مقتدہ الصدر کے ساتھ مذاکرات شروع کر دیے۔

ابھی وزارتی عہدوں کے حوالے سے کچھ کہنا قبل از وقت ہو گا لیکن اتحاد کے سینیئر لیڈروںکا کہنا ہے کہ الفتاح کو موجودہ وزیر اعظم حیدر العبادی کے دوبارہ وزیر اعظم مقرر کیے جانے پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔

جمعہ کو ن نتائج کا باقاعدہ اعلان ہونے کے بعد سے ہی سب سے بڑا پارلیمانی گروپ تشکیل دینے کے لیے عراق کی بڑی سیاسی طاقتوں کے درمیان مذاکرات شروع ہو گئے تھے۔سب سے بڑے اتحاد کو وزیر اعظم کا انتخاب کرنے اور حکومت سازئی کے لیے جملہ حقوق حاصل ہو جائیں گے۔آئندہ وزیر اعظم منتخب اور ایک مضبوط و پائیدار حکومت تشکیل دینے کے لیے الفتاح کی حمایت کرنا بہت ضروری ہے۔

الفتاح کے رجمان اور اس کے چند اہم لیڈروں میں سے ایک احمد اسدی نے کہا کہ مذاکرات، سب سے بڑے واحدپارٹی بن کر ابھرنے والے الصدر کے پارلیمانی گروپ سیرون کے ساتھ، جو 54سیٹیں جیت کر پہلی پوزیشن پر ہے، جاری ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ان میں سے کسی ایک کے بغیر بھی حکومت تشکیل دینے کا کوئی راستہ نہیں ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Iraqs al fattah leaders deep in coalition talks with muqtada al sadr in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply