ٹرمپ سعودی عرب سے معلوم کریں کہ ایک اور نائن الیون سے کیسے بچا جا سکتا ہے: ایران

تہران:ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے امریکی صدر کے دورہ سعودی عرب پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ سعودی عرب سے تبادلہ خیال کریں کہ نائن الیون جیسے مزید کسی واردات سے کیسے بچا جائے۔غیر ملکی جریدے العربیہ الجدید کے مطابق ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے امریکی صدر کے دورہ سعودی عرب پر ایک کالم لکھا ہے جس میں وہ تنقیدی انداز اپناتے ہوئے لکھتے ہیں کہ ہوسکتا ہے جلد ہی امریکیوں کو اس بات کا پتہ چل جائے کہ ورلڈ ٹریڈ سینٹر کس نے گرایا تھا۔
آپ کو اپنی انتہائی خفیہ دستاویزات دیکھنے کے بعد معلوم ہوگا کہ یہ سعودی ہی تھے جنہوں نے اتنی بڑی دہشت گردی کی کارروائی انجام دی تھی۔دوسری جانب سعودی عرب اس امر کی تردید کرتا ہے کہ اس نے 19ہائی جیکروں کو جن میں سے اکثریت سعودیوں کی تھی کسی قسم کی مدد بہم پہنچائی ہے۔ اس حملے میں کم و بیش3000افراد ہلاک ہوئے تھے۔ ایران اور سعودی عرب علاقائی روایتی حریف رہے ہیں اور دونوں ہی ایک دوسرے پر بنیاد پرست ملیشیاؤں کی سرپرستی اور کفالت کرنے کا الزام عائد کرتے ہیں۔
یاد رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اپنے پہلے غیر ملکی دورے پراہم مسلم ملک سعودی عرب پہنچے ہیں، جہاں انہوں نے عرب و مسلم سربراہان سے خطاب کیا ہے۔ گزشتہ روز منعقد ہونے والی اس کانفرنس میں ایران کی شرکت نہ تھی۔

Title: irans zarif urges trump to discuss avoiding another 911 with saudis | In Category: دنیا  ( world )
Tags: , , ,

Leave a Reply