خامنہ ای پر پابندیاں عائد کر کے امریکہ نے سفارت کاری کی راہ ہمیشہ کے لیے بند کر دی:ایران

تہران: ایران نے کہا ہے کہ امریکہ نے ملک کے رہبر اعظم اور دیگر حکام بالا کے خلاف پابندیاں عائد کر کے امریکہ و ایران کے درمیان ہمیشہ ہمیشہ کے لیے سفارت کاری کا راستہ بند کر دیا۔

خارجہ ترجمان سید عباس موسوی نے ٹوئیٹر کے توسط سے کہا کہ رہبر اعظم علامہ آیت اللہ خامنہ ای اور ایران کے اعلیٰ سفارت کار وزیر خارجہ محمد جواد ظریف پر پابندیاں عائد کرنا بے مقصد ہے اور اس سے صرف یہ نتیجہ برآمد ہوا ہے کہ دونوں ملکوں کے درمیان سفارت کاری کی راہیں ہمیشہ کے لیے مسدود ہو گئیں۔

انہوں نے کہا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا بوکھلاہٹ میں مبتلا ایڈمنسٹریشن عالمی امن و سلامتی برقرار رکھنے والے بین الاقوامی نظام کو تباہ کر رہا ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ نے ایران پر اور زیادہ دباؤ ڈالنے کے لیے ایران کے رہبر اعظم آیت اللہ خامنہ ای اور کئی فوجی افسران بالا پر پابندی عائد کرتے ہوئے دھمکی دی تھی کہ اگر ایران نے جنگ چھیڑی تو اس کو صفحہ ہستی سے مٹادیا جائے گا۔

امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ایران کے خلاف سخت مالی اقدامات پر اوول دفتر میں دستخط کرتے ہوئے یہ بھی کہاتھا کہ یہ ایران کی اشتعال انگیز کاروائیوں کاجو روز بروز بڑھتی جارہی ہیں سخت اور مناسب جواب ہے۔

مگر”ہم جنگ کے حق میں نہیں ہیں لیکن اب یہ ایران پر منحصر ہے کہ وہ کیا چاہتا ہے۔پابندیاں کل بھی اٹھ سکتی ہیں یا برسوں تک جاری بھی رہ سکتی ہیں ۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Iran us sanctions on khamenei mean end of diplomacy in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.